The news is by your side.

Advertisement

اپوزیشن جلسوں کو روکنے کیلیے طاقت کا استعمال نہ کرنے کا فیصلہ

حکومت نے اپوزیشن جلسوں کو روکنےکیلئےطاقت کے استعمال سےگریز کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ پی ڈی ایم کا جلسہ نہیں روکا جائے گا البتہ قانون کی خلاف ورزی پر ضابطےکی کارروائی ہر صورت کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرِصدارت حکومتی و پارٹی ترجمانوں کا اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس کی صورتحال پربریفنگ دی گئی اور موجودہ سیاسی صورتحال پربھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ جلسوں کو روکنےکیلئے سرکاری سطح پرمداخلت نہیں کی جائے گی اور قانون کی خلاف ورزی پرضابطےکی کارروائی ہرصورت ہوگی۔

اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن کرپشن بچانےکیلئےعوام کی زندگیاں خطرےمیں ڈال رہی ہے، اپوزیشن والے شاید مجھےجانتے نہیں میری حکومت بھی چلی جائےتواحتساب پرسمجھوتہ نہیں کروں گا۔

میری حکومت بھی چلی جائےتواحتساب پرسمجھوتہ نہیں کروں گا

انہوں نے کہا کہ خود انکا سارا خاندان باہر بیٹھاہے اور عوام کو اپنے لیے استعمال کر رہے ہیں یہ مینار پاکستان پر 10 جلسے کر لیں حکومت کوکوئی فرق نہیں پڑےگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں عوام کی فکر ہے جلسےکو سروس دینے والوں کیخلاف مقدمات ہوں گے ہم جلسہ نہیں روکیں گےان کی خواہش ہےکہ حکومت جلسہ روکے، اپوزیشن تصادم چاہتی ہے،حکومت تصادم کاموقع فراہم نہیں کرے گی۔

اجلاس میں فردوس عاشق اعوان کی فٹبال کک اور جوڈو کا ذکر ہوا تو وزیراعظم نے کہا کہ میں نے دیکھا ہےکہ فردوس عاشق پنجاب جاکربہت ایکٹو ہوگئی ہیں،تحریک انصاف کےلوگوں کواسی جنون کی ضرورت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں