The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں اسٹریٹ کرائم روکنے کیلیے ٹارگٹڈ آپریشن کا فیصلہ

وزیراعلیٰ سندھ نے اسٹریٹ کرائم کنٹرول کرنے کیلئے ٹارگٹڈ آپریشن کا فیصلہ کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ جو ایس ایچ او راہزنی کی واردتیں کنٹرول نہیں کر پار ہا اس کو فارغ کریں۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت اسٹریٹ کرائم پر خصوصی اجلاس ہوا جس میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ کراچی میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتیں بڑھ گئی ہیں مجھے پولیس اور رینجرز سڑکوں پرنظر نہیں آتیں اسٹریٹ کرائم کی وارداتیں اب بالکل برداشت نہیں کروں گا۔

مرادعلی شاہ نے کہا کہ میں شہر کے خود سرپرائز وزٹ کروں گا پولیس ،رینجرز جو بھی حکمت عملی ہے وہ بنائیں مجھے نتیجہ چاہئے، شہریوں کے جان و حفاظت کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

اجلاس کے دوران بریفنگ میں بتایا گیا کہ یکم تا 20 فروری تک ڈکیتی کے دوران 12 افرادجاں بحق ہوئے جب کہ مختلف وارداتوں میں 58افراد زخمی ہوئے ہیں جس پر وزیراعلیٰ نے کہا کہ یہ صورتحال کسی صورت قبول نہیں امن و امان ہر صورت ٹھیک ہونا چاہئے۔

وزیراعلیٰ نے ایس ایچ اوز کو15دن کی کارکردگی رپورٹ دینے کی ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ جو ایس ایچ او کنٹرول نہیں کر پار ہا اس کو فارغ کریں پولیس جوبھی اقدامات کرےمجھےفوری بہتری چاہیے جیل سےکچھ گینگ آپریٹ ہوتےہیں جیل میں بھی آپریشن کیا جائے، پولیس ہر ضلع میں رینجرز کی مدد سےٹارگٹڈ آپریشن کیے جائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں