The news is by your side.

پاکستان اور سعودی عرب میں وفود کی سطح پر مذاکرات، دو طرفہ تعلقات کیلئے اعلیٰ سطح روابط کے تسلسل پر اتفاق

اسلام آباد : پاکستان اور سعودی عرب میں وفود کی سطح پر مذاکرات میں دو طرفہ تعلقات کے استحکام کیلئے اعلیٰ سطح روابط کے تسلسل پر اتفاق کرلیا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق وزارتِ خارجہ میں پاکستان اور سعودی عرب میں وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے ، مذاکرات میں سعودی وفد کی قیادت سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان آل سعود نے اور پاکستانی وفد کی قیادت وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کی۔

مذاکرات میں کثیرالجہتی شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون ،اہم علاقائی و عالمی امور زیر بحث آئے اور وزیر خارجہ نے سعودی وزیر خارجہ اوروفد کو وزارت خارجہ آمد پر خوش آمدید کہا۔

اس موقع پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان،سعودی عرب میں مذہبی ،ثقافتی اورگہرے برادرانہ مراسم ہیں ، دونوں ممالک نے ہر مشکل وقت میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا، سعودی عرب کی خود مختاری،سالمیت کی حمایت جاری رکھنے کیلئے پر عزم ہیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستانیوں کےدلوں میں سعودی عرب کیلئےوالہانہ عقیدت ہے، سعودی عرب کی خوشحالی ،تعمیروترقی کواپنی ترقی سمجھتے ہیں۔

وزیر خارجہ نے خلیجی ممالک کےتنازعات کے حل کیلئے سعودی عرب کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا مسئلہ کشمیر پرسعودی عرب کی پاکستانی مؤقف کی حمایت قابل ستائش ہے اور اوآئی سی میں مثبت کردار پر سعودی قیادت کےشکر گزار ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اعلیٰ سطح روابط سے پاکستان،سعودی عرب میں دو طرفہ تعلقات کو وسعت ملی، مشکل حالات میں پاکستان کو معاونت پر سعودی قیادت کے ممنون ہیں، مذاکرات میں افغانستان سے غیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔

افغان مسئلے کے حوالے سے شاہ محمود قریشی نے مزید کہ پاکستان، خطے میں امن و استحکام کا خواہاں ہے، افغان مسئلے کے پر امن حل کیلئے عالمی برادری افغان قیادت پر زور دے ، جامع مذاکرات کے ذریعے افغان مسئلے کا پر امن سیاسی حل نکالاجائے۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں مؤثر حکمت عملی سےکورونا صورتحال دیگر ممالک کی نسبت بہتر ہے،توقع ہے سعودی عرب کی جانب سے عائد ویزہ پابندیوں پرنظر ثانی کی جائے گی۔

وفود کی سطح پر مذاکرات میں دو طرفہ تعلقات کے استحکام کیلئے اعلیٰ سطح روابط کے تسلسل پر اتفاق کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں