The news is by your side.

Advertisement

ماہرین کی کرونا کی ڈیلٹا اور ڈیلٹا پلس اقسام سے متعلق خوفناک دریافت

جرمن ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ ڈیلٹا اور ڈیلٹا پلس اقسام نے ویکسینیشن کرانے والے افراد میں وائرس کے خلاف مزاحمت کرنے والی اینٹی باذیز کے خلاف سخت مزاحمت کرتی ہے جو ڈیلٹا ویرینٹ کے عالمی سطح پر تیزی سے پھیلنے کا باعث بنی۔

طبی جریدے جرنل سیل رپورٹس میں شائع ہونے والی جرمن پرائیمیٹ سینٹر کی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ ڈیلٹا کی ذیلی قسم ڈیلٹا پلس کو اضافی میوٹیشنز دیگر کی نسبت زیادہ خطرناک بناتے ہیں جو پھیپھڑوں کو دیگر اقسام کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے متاثر کرتی ہے۔

تحقیق کے مطابق ڈیلٹا قسم پھیپھڑوں کے خلیات میں تبدیلیاں لانے کے حوالے سے زیادہ بہتر کام کرتی ہے اور متاثرہ خلیات کو صحت مند خلیات میں بھی شامل کردیتی ہے، جس کے نتیجے میں وہ زیادہ افراد کو بیمار کرنے میں کامیاب ہوگئی۔

تحقیق میں بھی دریافت کیاگیا کہ کوویڈ 19 کے علاج کے لیے استعمال ہونے والے 4 مونوکلونل اینٹی باڈیز میں سےایک (bamlanivimab) ڈیلٹا اور ڈیلٹا پلس کے خلاف مؤثر نہیں بلکہ وہ دیگر 2 اینٹی باڈیز کے خلاف بھی مزاحمت کرتی ہیں۔

اسی طرح فائزر/ بائیو این ٹیک اور ایسٹرا زینیکا ویکسینز کے استعمال سے بننے والی اینٹی باڈیز بھی اوریجنل وائرس کے مقابلے میں ڈیلٹا اور ڈیلٹا پلس کے خلاف زیادہ مؤثر نہیں ہوتیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں