The news is by your side.

لازمی سروسزایکٹ : خیبر پختونخوا میں ڈاکٹروں نے ہڑتال کردی

پشاور : خیبر پختونخوا میں لازمی سروس ایکٹ کے خلاف مسیحاؤں نے ہڑتال کردی۔ ڈاکٹروں کے احتجاج کے باعث مریضوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ حکومت نےخبر دار کیا ہے کہ ہڑتالی ڈاکٹرز کی نوکری کی کوئی ضمانت نہیں۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا حکومت نے ہڑتالی ملازمین کو سدھارنے کے لئے صوبے کے تمام اسپتالوں میں لازمی سروس ایکٹ کا نفاذ کیا تو ڈاکٹرز بھی خم ٹھونک کر میدان میں نکل آئے۔

پشاور بنوں ، چارسدہ سمیت مختلف شہروں میں مسیحا حکومتی فیصلے کے خلاف سراپا حتجاج ہیں۔ اسپتالوں میں کام متاثر ہونے سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

حیات آباد کمپلیکس میں ڈاکٹرز او پی ڈی کے سامنے ٹینٹ لگا کر مریض دیکھ رہے ہیں تو دوسری جانب لاٹھی، ڈنڈوں سے لیس پولیس بھی مظاہرین سے نمٹنے کے لئے تیار ہے۔

حکومت نے خبر دار کر رکھا ہے کہ ہڑتالی ڈاکٹرزکی نوکری کی کوئی ضمانت نہیں ہے۔

دوسری جانب خیبر پختونخوا میں لازمی سروس ایکٹ کے خلاف احتجاج کرتے ڈاکٹرز سے بات چیت کے لئےوزیر اعظم کے مشیر خاص امیر مقام حیات آباد کمپلیکس پہنچ گئے ہیں۔ امیر مقام کا کہنا ہے کہ ہڑتالی ڈاکٹرز کے مطالبات جائز ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں