The news is by your side.

Advertisement

امریکی صدر کے کتوں کو سیکرٹ سروس ایجنٹ کو کاٹنے کی سزا مل گئی

واشنگٹن: امریکی صدر جو بائیڈن کے پالتو کتوں کو ایک سیکیورٹی گارڈ کو کاٹنے پر وائٹ ہاؤس سے نکال دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وائٹ ہاؤس میں ایک سیکرٹ سروس ایجنٹ کو کاٹنے پر صدر جو بائیڈن کے پالتو کتوں کو وائٹ ہاؤس سے نکال دیاگیا۔

دونوں کتوں کو گزشتہ ہفتے صدر بائیڈن کے ڈیلاویئر والے گھر منتقل کر دیا گیا ہے، غیر ملکی میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ جرمن شیفرڈ وائٹ ہاؤس کے عملے کو دیکھ کر بھونکتے اورسیکیورٹی عملے کے ارکان پر حملہ کرتے تھے۔

یہ کتے صدر جو بائیڈن اور ان کی اہلیہ جِل بائیڈن کے تھے، بتایا گیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں ان کتوں کا رویہ بڑا جارحانہ ہو گیا تھا۔

وائٹ ہاؤس کے ایک اسٹاف ممبر کو جس کتے نے کاٹا تھا اس کا نام میجر تھا، جسے 2018 میں بائیڈن نے ڈیلاویئر اینیمل شیلٹر سے لیا تھا، جب کہ متاثرہ سیکیورٹی گارڈ کی حالت کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں۔

سابق امریکی صدر کا دوست کی ناک توڑنے کا انکشاف

منگل کو وائٹ ہاؤس کے پریس سیکریٹری جَین ساکی نے تصدیق کی کہ میجر نے ایک شخص کو کاٹا ہے، چیمپ اور میجر وائٹ ہاؤس میں نئے ماحول اور نئے لوگوں کے ساتھ گھل مل رہے تھے کہ پیر کو چھوٹے کتے میجر کو ایک انجان شخص نے حیران کر دیا، جس پر اس نے اُس سیکیورٹی گارڈ پر حملہ کر کے اسے معمولی زخمی کر دیا۔

انھوں نے بتایا کہ زخمی اہل کار کو وائٹ ہاؤس میڈیکل یونٹ نے فوری طبی امداد فراہم کر دی تھی۔

امریکی میڈیا کے مطابق سیکرٹ سروس حکام نے بتایا کہ زخمی اہل کار دراصل امریکی سیکرٹ سروس ایجنٹ تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 3 سالہ میجر سے متعلق وائٹ ہاؤس کے لوگوں نے بتایا کہ اس نے متعدد مواقع پر اشتعال انگیز رویہ اپنایا، جس میں چھلانگیں لگانا، بھونکنا، اور عملے اور سیکیورٹی پر غرۤانا شامل تھا۔ میجر کے برعکس چیمپ، اپنی عمر 13 سال کے باعث جسمانی طور پر سست پڑ چکا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں