تازہ ترین

کوئٹہ: تفتان جانیوالی بس سے اغوا کیے گئے 9 مسافر قتل

کوئٹہ:نوشکی کے قریب تفتان جانیوالی بس سے اغوا کیے...

بہاولنگر واقعے کی مشترکہ تحقیقات ہوں گی، آئی ایس پی آر

آئی ایس پی آر نے کہا ہے کہ بہاولنگر...

عیدالفطر پر وفاقی حکومت نے عوام کو خوشخبری سنا دی

اسلام آباد: عیدالفطر کے موقع پر وفاقی حکومت نے...

ایشیائی بینک نے پاکستان میں مہنگائی میں کمی کی پیشگوئی کر دی

ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان میں آئندہ مالی سال...

سنگدل شخص نے بیوی اور 7 بچوں کو قتل کر دیا

پنجاب کے علاقے مظفر گڑھ میں اجتماعی قتل کا...

’’چھپکلی کو نہ ماریں اس کے بچے ہوں گے، کیا سوچے گی؟‘‘

بچوں کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ من کے سچے ہوتے ہیں اور ایسا ہی ہے کیونکہ جو ان کے ذہن میں ہوتا ہے وہی ان کی زبان سے ادا ہوتا ہے۔

اے آر وائی ڈیجیٹل کے پروگرام شان سحور میں شوبز انڈسٹری کے منجھے ہوئے اداکار احسن خان نے اپنے دو بچوں اکبرخان اور زین خان کے ہمراہ شرکت کی اور ان کے بچپن کی دلچسپ یادیں شیئر کیں۔

انہوں نے بتایا کہ میرا بڑا بیٹا اکبر بہت زیادہ حساس طبیعت کا مالک ہے خاص طور پر جانوروں کے حوالے سے بہت نرم دل ہے کسی بھی زخمی پرندے کو دیکھ کر اس کی مرہم پٹی کیلئے گھر اٹھا کر لے آتا ہے۔

اس کے بچپن کی ایک دلچسپ بات بیان کرتے ہوئے احسن خان نے بتایا کہ جب ہم گھر میں کسی چھپکلی کو مارتے تھے تو یہ زور زور سے چیخ کر روتا تھا اور کہتا تھا کہ چھپکلی کو نہ ماریں اس کے بچے ہوں گے کیا سوچے گی؟ یا لال بیگ کو نہیں ماریں مرجائے گا۔

اکبر خان نے بتایا کہ مجھے بڑے ہوکر مصور بننا ہے اور نیشنل جیوگرافک میں کام کرنا چاہتا ہوں۔ انہوں نے بتایا کہ مجھے تمام جانوروں میں فالکن زیادہ پسند ہے۔

Comments

- Advertisement -