عدالت نے ڈاکٹرعاصم کی ای سی ایل سےنام نکالے جانےسےمتعلق درخواست نمٹادی
The news is by your side.

Advertisement

عدالت نے ڈاکٹرعاصم کی ای سی ایل سےنام نکالے جانےسےمتعلق درخواست نمٹادی

کراچی : ڈاکٹرعاصم کانام ای سی ایل سے نہ ہٹائے جانے پر عدالت نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا عدالتی حکم کو ہی نوٹی فکیکشن سمجھا جائے اور ڈاکٹر عاصم کا نام مستقل طور پر ای سی ایل سے نکالا جائے۔

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹرعاصم کی سیکریٹری داخلہ کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پر سماعت ہوئی ، سماعت جسٹس مشیرعالم ،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ پر مشتمل دو رکنی بینچ نے کی۔

ڈاکٹر عاصم حسین کا نام ای سی ایل سےہٹانے کےحکم کے باوجود نہ ہٹائے جانے پر سپریم کورٹ نے اظہار برہمی کیا۔

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہا کہ آپ کو نام ای سی ایل سے نکالنے کاحکم دیا تھا، آپ نے اپنے طور پر اجازت نامہ جاری کردیا، لگتاہےایڈیشنل اٹارنی جنرل جواب دینے کی پوزیشن میں نہیں۔ صحت مند ہونے پر نام دوبارہ ای سی ایل میں شامل ہوسکتا ہے، عدالت آپ کو بااختیار بنانا چاہتی ہے مگرآپ ایسانہیں چاہتے۔

جس پر ایڈیشنل سیکریٹری داخلہ نے جواب دیا کہ نام ای سی ایل سےفوری ہٹایا جائے گا۔


مزید پڑھیں : ڈاکٹر عاصم حسین کا لندن جانے کا امکان، این او سی جاری


جسٹس مشیر عالم نے کہا کہ ڈاکٹرعاصم کانام ای سی ایل سے مستقل طورپرنکالنے کاحکم دیا ہے، ڈاکٹرعاصم کا نام ای سی ایل میں نہ ڈالا جائے۔

سپریم کورٹ نے ڈپٹی اٹارنی جنرل کی جانب سے ڈاکٹر عاصم کا نام ای سی ایل سے نکالنے سے آگاہ کرنے کے بعد توہین عدالت کی درخواست نمٹا دی۔

گذشتہ سماعت میں ڈاکٹر عاصم کا نام ای سی ایل سے نہ نکالنے پر عدالت نےسیکریٹری داخلہ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا تھا۔

ل رہے اس سے قبل سندھ ہائی کورٹ کے حکم کے بعد ڈاکٹر عاصم حسین کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ ( ای سی ایل) سے نکال دیا گیا تھا جس کے بعد وہ علاج کے سلسلے میں بیرون ملک روانہ ہوگئے تھے اوراکتوبر کی چھ تاریخ کو وطن لوٹ آئے تھے۔

ڈاکٹر عاصم نے میڈیا سے گفتگو میں کہا تھا جو لوگ کہتے تھے میں نہیں آؤں گا دیکھ لو میں آگیا ہوں، بے بنیاد مقدمات کا سامنا کیا ہے اور کروں گا، جنہوں نے جھوٹے کیسز کرائے آج خود کیسز کا سامنا کر رہے ہیں۔


مزید پڑھیں : بھاگنے والوں میں سے نہیں، ڈاکٹر عاصم


انکا کہنا تھا کہ ہم پاکستان سے بھاگنےوالوں میں سے نہیں ہیں، نوازشریف یہ غلط فہمی میں نہ رہے کہ پاکستان اس کا ہے، شریف خاندان پہلے بھی 10سال ملک سے باہر تھا، شریف خاندان اب بھی ملک سے بھاگ سکتا ہے، ن لیگ ملک کو 200سال پیچھے لےجانا چاہتی ہے۔

واضح رہے کہ رواں سال 29 مارچ کو سندھ ہائی کورٹ نے طبی بنیادوں پر ڈاکٹرعاصم حسین کے خلاف 479 ارب روپے کی کرپشن کے 2 مقدمات میں 25،25 لاکھ روپے کے 2 ضمانتی مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کی تھی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں