این اے 122 : ضمنی الیکشن کالعدم قرار دینے کی درخواست مسترد -
The news is by your side.

Advertisement

این اے 122 : ضمنی الیکشن کالعدم قرار دینے کی درخواست مسترد

اسلام آباد / لاہور : ایاز صادق کی نشست پر ضمنی الیکشن کالعدم قرار دینے کی درخواست مسترد قرار دے دی گئی۔ الیکشن کمیشن نے فیصلے میں کہا ہے کہ عبدالعلیم خان نے غلط بیان حلفی جمع کرایا ان کے خلاف کارروائی کی جاسکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسپیکرایازصادق کی وکٹ اڑانے کی ایک اورکوشش ناکام ہوگئی۔ امپائرنے کپتان کے کھلاڑی کوہی وارننگ دے ڈالی۔ الیکشن کمیشن نے فیصلہ سنایا کہ این اے ایک سو بائس کاضمنی انتخاب کالعدم قرار نہیں دیا جاسکتا۔

درخواست گذارعبدالعلیم خان نے غلط بیان حلفی جمع کرائے ہیں ان کے خلاف کارروائی کی جاسکتی ہے۔

دوسری جانب پی ٹی آئی کے رہنما عبدالعلیم خان نے فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ جانے کا عندیہ دے دیا، علیم خان نے الزام عائد کیا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر سردار رضا بھی این اے ایک سو بائیس کی دھاندلی میں ملوث تھے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عبدالعلیم خان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن اور ٹربیونل کے ممبران نے دھاندلی کے بدلے حکومت سے اپنے رشتہ داروں کی غیرملکی تقرریوں اور ترقیوں کے فائدے لئے۔

الیکشن کمیشن نے ساٹھ دنوں میں این اے 122 کا فیصلہ نہ دے کر اپنے ہی قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کی ہے۔ دھاندلی کیس کی تحقیقات میں الیکشن کمیشن اور ٹربیونل نے تحریک انصاف کی پٹیشن کو شٹل کاک بنا دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کیخلاف اب سپریم کورٹ جانے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں بچا، انہوں نے کہا کہ پارٹی نے کہا تو جلد این اے 122 میں دھرنا بھی دیا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں