The news is by your side.

Advertisement

بھارتی الیکشن کمیشن نے انتخابی مہم میں فوجیوں کی تصاویر پر پابندی لگادی

نئی دہلی : بھارتی الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں کو اپنی الیکشن مہم میں فوجیوں کی تصاویر کے استعمال سے روک دیا، وزارت دفاع اور سابق نیول چیف کی جانب سے توجہ دلانے پر نوٹی فکیشن جاری کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق انڈیا میں برسر اقتدار بھارتیہ جنتا پارٹی نے اپنی الیکشن مہم میں پائلٹ ابھی نندن کے تصویروں کے پوسٹرز کا استعمال شروع کردیا، بھارتی پائلٹ کی رہائی سے پاک بھارت کشیدگی میں کمی آئی لیکن بھارتی وزیراعظم نے حزیمت سے نظریں چراتے ہوئے اسی پائلٹ کو اپنی سیاسی مہم کے لیے استعمال کرنا شروع کر دیا۔

مودی کی انتخابی مہم میں فوجیوں کی تصاویر کا استعمال سابق فوجی سربراہ کو ناگوار گزرا، بھارتی بحریہ کے سابق سربراہ رام داس نے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا۔

خط میں کہا گیا کہ مودی سرکار بھارتی فوج کا سیاسی استعمال بند کرے، پلوامہ، بالاکوٹ اور ابھی نندن کی تصویریں انتخابی مہم کا حصہ نہ بنائی جائیں۔ رام داس نےالیکشن کمیشن سےدرخواست کی کہ سیاسی پارٹیوں کو فوجیوں کی تصاویر اور دیگر چیزوں کے استعمال سے روکا جائے۔

الیکشن کمیشن آف انڈیا نے نوٹس لیتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری کردیا جس میں کہا گیا ہے کہ سیاسی جماعتوں کے رہنماﺅں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ جدید جمہوریت میں فوج غیر سیاسی ہوتی ہے اس لیے اسے سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال نہ کیا جائے۔

واضح رہے کہ بھارتی جارحیت پر پاکستان کی جانب سے منہ توڑ جواب دینے کے بعد مودی سرکار کو ملکی اور بین الاقوامی سطح پر شرمندگی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

بی جے پی کی جانب سے اس واقعہ کو سیاست چمکانے کے لیے استعمال کرنے کی بھونڈی کوشش کی جارہی ہے جبکہ بھارت کے سنجیدہ حلقوں اور اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے بی جے پی کو شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں