The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں کام کرنے والے غیر ملکی انجینیئرز کے لیے بری خبر

ریاض: سعودی عرب میں کام کرنے والے غیر ملکی انجینیئرز کے لیے بری خبر آگئی، انجینیئرنگ کے شعبے میں بھی سعودائزیشن کی تیاریاں شروع کردی گئیں۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی عرب کے وزیر افرادی قوت و سماجی بہبود انجینیئر احمد الراجحی کا کہنا ہے کہ ایک ماہ کے اندر انجینیئرنگ کے شعبے میں بھی سعودائزیشن کے فیصلے کا اعلان کردیا جائے گا۔

سعودی وزیر کے مطابق اس کے فوری بعد تمام انجینیئرز سعودی تعینات کروائے جائیں گے اور یہ کام پوری قوت سے انجام دیا جائے گا۔ ان دنوں تمام شعبوں کی سعودائزیشن کے طریقہ کار کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ ہمارا ہدف یہ ہے کہ سعودی کالجوں، یونیورسٹیوں اور انسٹی ٹیوٹس سے نئے فارغ ہونے والے سعودی نوجوانوں کو نجی اداروں اور کمپنیوں میں کھپا دیا جائے۔

سعودی وزیر کے مطابق مختلف شعبوں کی سعودائزیشن سے متعلق وزارت کی کوشش ہے کہ ہر شعبے کے لیے سعودائزیشن کی مخصوص شرح مقرر کردی جائے۔ یہ کام فارماسسٹ اور ڈینٹل میڈیسن کی طرز پر انجام دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ زیادہ زور اس بات پر ہوگا کہ ایسے شعبے اور ایسے ادارے جن میں سعودی زیادہ رغبت رکھتے ہوں اور جو سعودیوں کے لیے زیادہ پرکشش ہوں ان میں زیادہ سے زیادہ سعودائزیشن ہو۔ ان اداروں اور شعبوں پر کام کرنے والے سعودیوں کی تنخواہیں بھی اچھی ہوں۔

سعودی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ اس سلسلے میں انجینیئرنگ اور اکاﺅنٹنٹ جیسے شعنے خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں