The news is by your side.

یورپی ممالک نے روسی شہریوں کی مشکلات میں اضافہ کردیا

برسلز : یوکرین اور روس کے درمیان حالیہ جنگ کے دوران یورپی ممالک نے یوکرین کی حمایت اور روس کی مخالفت میں متعدد اقدامات کیے ہیں۔

اس حوالے سے روس کی سرحد سے متصل یورپی یونین کے پانچ ممالک فن لینڈ، ایسٹونیا، لاتویا، لتھوانیا اور پولینڈ نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ وہ عوامی سلامتی کے مسائل کو حل کرنے کے لیے روس کے ساتھ ویزا سروس پر عارضی پابندی عائد کرسکتے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق یورپی یونین کے وزرائے خارجہ نے روس کے ساتھ ویزا معاہدے کو معطل کرنے پر رضامندی ظاہر کی ہے جس کی وجہ سے روسی شہریوں کے لئے یونین کے رکن ممالک میں داخلہ مشکل ہو گیا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ روس کی سرحد سے متصل یورپی یونین کے پانچ ممالک فن لینڈ، ایسٹونیا، لاتویا، لتھوانیا اور پولینڈ نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ وہ عوامی سلامتی کے مسائل کو حل کرنے کے لیے عارضی پابندی عائد کرسکتے ہیں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ یوکرین اور بعض رکن ممالک نے روس پر مکمل پابندی کا مطالبہ کیا ہے لیکن فرانس اور جرمنی جیسے دیگر ممالک نے اس کی مخالفت کی ہے۔ تاہم روس کی سرحد سے متصل مشرقی یورپی یونین کے کئی ممالک روس کے خلاف پابندیاں عائد کرسکتے ہیں۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق فروری میں یوکرین پر روسی حملے کے بعد سے دس لاکھ سے زائد روسی شہری یورپی یونین کا سفر کرچکے ہیں۔

بی بی سی نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ فرانس اور جرمنی نے ایک مشترکہ بیان میں خبردار کیا ہے کہ دور رس پابندیاں روس کو شکار بنا سکتی ہیں اور روسی شہریوں کی آنے والی نسلوں کو علیحدہ کرسکتی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں