The news is by your side.

Advertisement

سیہون دھماکہ: خودکش بمبار کے سہولت کاروں کی نشاندہی

سیہون میں حضرت لعل شہباز قلندر کے مزار پر دھماکے کے کیس میں اہم پیش رفت سامنے آگئی۔ پولیس نے خودکش حملہ آور کے بعد اس کے سہولت کاروں کی بھی نشاندہی کردی۔

تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل آئی جی محکمہ انسداد دہشت گردی سندھ ثنا اللہ عباسی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ سیہون مزار پر دھماکے سے ایک دن پہلے خودکش بمبار نے سہولت کاروں کے ساتھ ریکی کی۔

پولیس نے سہولت کاروں کی نئی ویڈیو جاری کردی۔

وہڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ دھماکے سے ایک روز قبل خود کش حملہ آور نے نیلے رنگ کے کپڑے پہنے ہیں اور وہ 2 سہولت کاروں کے ساتھ مزار پر ریکی کر رہا ہے۔

مزید پڑھیں: درگاہ لعل شہباز قلندر پر خودکش حملہ، 76 افراد شہید

دہشت گردوں نے 25 منٹ تک مزار کی تصویریں بھی بنائی۔ ایک سہولت کار نے نیلے اور دوسرے نے کالے رنگ کی شلوار قمیض پہن رکھی ہے۔ سہولت کاروں نے خودکش حملہ آور کی کئی تصاویر بھی بنائی۔

اس سے پہلے بھی ایک ویڈیو جاری کی گئی تھی جس میں بمبار پہلے ایک راستے سے مزار میں داخل ہونے کی کوشش کرتا دکھائی دیا لیکن وہاں تلاشی ہوتی دیکھ کر پلٹا اور دوسرے راستے سے چکمہ دے کر نکل گیا۔

ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی ثنا اللہ عباسی نے دہشت گردوں کی شناخت کے لیے عوام سے مدد مانگتے ہوئے پچاس لاکھ روپے انعام کا اعلان بھی کردیا۔

یاد رہے کہ 16 فروری کو سیہون شریف میں حضرت لعل شہباز قلندر کی درگاہ پر خوفناک خود کش دھماکے میں 83 افراد شہید اور 150 کے قریب زخمی ہوگئے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں