The news is by your side.

Advertisement

جعلی اکاؤنٹس کیس : وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بیان ریکارڈ کرادیا

اسلام آباد : جعلی اکاؤنٹس کیس میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بیان ریکارڈ کرادیا ، نیب کی 6رکنی ٹیم نے وزیراعلیٰ سندھ سے ٹھٹھہ، دادو شوگرملز کیس میں پوچھ گچھ کی۔

تفصیلات کے مطابق جعلی اکاؤنٹس کیس میں وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ ایک گھنٹےکی تاخیرسے نیب ہیڈکوارٹرز پہنچے، نیب کی 6رکنی ٹیم وزیراعلیٰ سندھ سے ٹھٹھہ، دادو شوگرملز کیس میں پوچھ گچھ کی ، تحقیقاتی ٹیم کےسربراہ ڈی جی نیب عرفان منگی خود بیان ریکارڈ کیا جبکہ مراد علی شاہ کو تحریری سوال نامہ بھی دیا گیا۔

وزیراعلیٰ سندھ کی نیب پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے، نیب دفتر کے اطراف ایک ہزار اہلکار تعینات کر دیئے گئے ہیں جبکہ نیب دفتر کے اندر رینجرز کو تعینات کیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق خاردار تاریں اور رکاوٹیں کھڑی کرکے نیب دفتر جانے والے راستے بند کر دیے، کارکنان کو نادرا چوک سے آگے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

مزید پڑھیں : جعلی بینک اکاؤنٹس کیس، وزیراعلیٰ سندھ کا کل نیب کے سامنے پیش ہونے کا فیصلہ

خیال رہے نیب نے وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کو 26 مارچ کو طلب کیا تھا لیکن مراد علی شاہ نے 26 کی بجائے 25 مارچ کو پیش ہونےکافیصلہ کیا تھا،وزیراعلیٰ سندھ کو ٹھٹھہ، دادوشوگرملز کیس میں ریکارڈ سمیت طلب کیا گیا ہے۔

یاد رہے نیب راولپنڈی نے 20 مارچ کو وزیراعلیٰ سندھ کی طلبی کا نوٹس جاری کیا تھا، ذرائع کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ کو سکرنڈ،کھوسکی،دادو، ٹھٹھہ، پنگریو شوگرملز کو سبسڈی دیے جانے کے معاملے پر طلب کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق سندھ حکومت نےاومنی گروپ کی شوگر ملز کو اربوں روپے کی سبسڈی دی جس کے باعث قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچا، قومی احتساب بیورو شوگر ملز کو دی جانے والی سبسڈی کےمعاملے پر بھی تحقیقات کررہا ہے، جس کے دوران بہت سی اہم باتیں سامنے آئیں۔

واضح رہے 20 مارچ کو پیپلزپارٹی چیئرمین بلاول بھٹو اور شریک چیئرمین آصف زرداری نے پارک لین کمپنی کیس میں نیب میں پیش ہوکر بیان ریکارڈ کرادیا، تفتیشی حکام نے دونوں سے 45 منٹ سے زائد پوچھ گچھ کی جبکہ ویڈیو بیان بھی ریکارڈ کیا گیاتھا۔

بلاول بھٹو اور آصف زرداری کی پیشی پر پیپلزپارٹی کے کارکنان نے نیب عدالت میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی، جیالوں نے اہلکاروں پر پتھراؤ بھی کیا، جس کے باعث پانچ پولیس اہلکار زخمی ہوئے، بعد ازاں پولیس نے 100 سے زائد جیالوں کو گرفتار کر کے مختلف تھانوں میں منتقل کردیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں