The news is by your side.

Advertisement

فاروق ایچ نائیک نے یوسف رضاگیلانی کے مسترد شدہ ووٹ چیلنج کر دیے

اسلام آباد: فاروق ایچ نائیک نے پریزائیڈنگ افسر کے سامنے یوسف رضاگیلانی کے مسترد شدہ ووٹ چیلنج کر دیے۔

تفصیلات کے مطابق فاروق ایچ نائیک نے یوسف رضاگیلانی کے مسترد شدہ ووٹ کو چیلنج کر دیا ہے، انھوں نے کہا مہر خانے کے اندر ہی نام کے اوپر لگی ہوئی ہے۔

پریزائیڈنگ افسر نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے 7 ووٹ مسترد ہوئے، مسترد 7 ووٹوں میں باکس کی بجائے نام پر مہر لگائی گئی ہے، جب کہ ایک ووٹ دونوں امیدواروں کے خانوں میں مہر لگانے پر مسترد ہوا۔

فاروق نائیک نے کہا کہ خانے کے اندر مہر لگانی ہے یہ کہیں نہیں لکھا کہ نام پر نہ لگائیں، سیکریٹری صاحب نے خود یہ بات کہی کہ مہر خانے کے اندر ہونی چاہیے، خانے کے اندر مہر والے ووٹ مسترد کرنا غیر قانونی اقدام اور دھاندلی کے مترادف ہے۔

صادق سنجرانی کے پولنگ ایجنٹ سینیٹر محسن عزیز نے کہا فارم میں لکھا ہے امیدوار کے نام کے سامنے خانے پر مہر لگائیں، امیدوار کے نام کے اوپر مہر نہ لگائیں۔

صادق سنجرانی چیئرمین سینیٹ منتخب

پریزائیڈنگ آفیسر کا کہنا تھا کہ مہر خانے کے اندر ہی نام کے اوپر لگی ہوئی ہے، خانے کے اندر مہر لگانی ہے یہ کہیں نہیں لکھا کہ نام پر نہ لگائیں۔ انھوں نے مزید کہا بیلٹ پیپر پر میرا بھی خیال ہے نام کے سامنے خانے میں مہر لگائی جائے، پریزائڈنگ افسر نے اپوزیشن کا احتجاج مسترد کرتے ہوئے کہا میں رولنگ دے رہا ہوں کہ آپ کو نہیں پسند تو الیکشن ٹریبونل جائیں۔

واضح رہے کہ حکومتی امیدوار صادق سنجرانی 48 ووٹ لے کر چیئرمین سینیٹ منتخب ہو گئے ہیں، جب کہ ان کے مقابلے میں پی ڈی ایم کے امیدوار یوسف رضا گیلانی کو 42 ووٹ ملے، ان کے 7 ووٹ مسترد ہوئے۔ صادق سنجرانی نے دوسری مرتبہ چیئرمین سینیٹ کی حیثیت سے حلف اٹھایا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں