site
stats
پاکستان

اجازت نہ ملے تو بھی 5 نومبر کو جلسہ کریں گے، فاروق ستار

کراچی: ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے کہا ہے کہ جلسے کی اجازت نہیں ملی تو بھی 5 نومبر کو جلسہ کریں گے، جلسے کی جگہ تبدیل کرنے کے لیے تیار ہیں انتظامیہ تعاون نہیں کررہی۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ مردم شماری میں سندھ کے ساتھ نا انصافیوں کے خلاف احتجاجی جلسہ کرنا ہمارا حق ہے، ہماری تیاریاں ہیں جلسے کی اجازت ملنی چاہئے، جلسے کی اجازت نہ بھی ملی تو 5 نومبر کو مزار قائد، لیاقت آباد یا خالد بن ولید روڈ پر جلسہ کریں گے۔

سربراہ ایم کیو ایم پاکستان نے کہا کہ صاف منع کردیا گیا ضلع ایسٹ میں ایک وقت میں دو جلسے نہیں ہوسکتے، کہا گیا کہ ایسٹ تو دور سینٹرل میں بھی جلسہ نہیں ہوسکتا، انتظامیہ تعاون نہیں کررہی ہے۔

ہمارے سیاسی اور جمہوری حق کو غصب کیا جارہا ہے

فاروق ستار نے کہا کہ ہمارے سیاسی اور جمہوری حق کو غصب کیا جارہا ہے، ہمارے پارٹی کے جھنڈوں کو لگانے سے بھی روکا جارہا ہے، معلوم نہیں پولیس انتظامیہ کس کے کہنے پر ہمارے جھنڈے اتار رہی ہے۔

منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع ہوگئی ہیں

انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے کی جانب سے منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع ہوگئی ہیں، ایف آئی اے کی جانب سے ہمارے کچھ ساتھیوں کو لیٹر ملے ہیں، ایف آئی اے نے لیٹرز میں کچھ سوالات مانگے ہیں بعض نے جواب دئیے ہیں، سرفراز مرچنٹ نے حال ہی میں ہم پر الزام لگایا اس کی تردید کرتا ہوں، سرفراز مرچنٹ کے تحریری بیان پر یہ ساری تحقیقات ہورہی ہیں۔

ارشد وہرہ منی لانڈرنگ میں ملوث نہیں

فاروق ستار نے کہا کہ 22 اگست سے پہلے منی لانڈرنگ کا میرے علم میں نہیں، 22 اگست کے بعد ضمانت دیتا ہوں کسی قسم کی منی لانڈرنگ نہیں ہوئی، ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں پر لگنے والے الزامات جھوٹے ہیں، ارشد وہرہ ہمیں چھوڑ کر چلے گئے لیکن یقین سے کہتا ہوں وہ ملوث نہیں، ایم کیو ایم پاکستان پر بے بنیاد الزامات لگائے جارہے ہیں۔

سرفراز مرچنٹ کراچی میں ہونے والے جرائم میں کلیدی کردار رہے

سربراہ ایم کیو ایم پاکستان نے کہا کہ سرفراز مرچنٹ کراچی میں ہونے والے جرائم میں کلیدی کردار رہے، سرفراز مرچنٹ کے لگائے گئے تمام الزامات سختی سے مسترد کرتا ہوں، کسی بھارتی سے نہیں ملا، سرفراز مرچنٹ جھوٹ بول رہے ہیں، ہر قسم کے الزامات اور تحقیقات کا سامنا کریں گے۔

یہ پڑھیں: ڈپٹی میئر شپ کو بچانے کے لیے فاروق ستار خود میدان میں اتر گئے


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top