The news is by your side.

Advertisement

“جون تک ایف اےٹی ایف گرے لسٹ سےنکل جائیں گے”

اسلام آباد: وزیرخزانہ شوکت ترین نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ جون تک ایف اےٹی ایف گرے لسٹ سےنکل جائیں گے، زیادہ تر شرائط پوری کر دی ہیں اور اب معاملہ زیادہ تر سیاسی رہ گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبا د میں صحافیوں کیساتھ آئن لائن میٹنگ میں گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا کہ اس وقت ملک کا گروتھ ریٹ پانچ فیصداور آئندہ سال چھ فیصد تک جاسکتا ہے، گروتھ ریٹ کو متنازع نہیں بناناچاہیے۔

شوکت ترین نے کہا کہ ایف بی آر کے محصولات بڑھنے تک حکومت مقروض رہےگی، ترسیلات زربڑھنے کی ایک بڑی وجہ وزیراعظم عمران خان پراعتماد ہے،پورے ملک سے پیسےجمع ہوتے ہیں اور پچاسی فیصدنو شہروں پرخرچ ہوجاتےہیں، ایسا نہیں ہونا چاہیے۔

ورچوئل گفتگو میں وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا کہ ا ین ایف سی کے درمیان دواہم چیزیں تھیں، پہلی یہ کہ اس وقت8.8فیصدجی ڈی پی تھاہم نےکہاتھایہ20فیصد جاناچاہئے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ آئی ایم ایف نےاس بارپاکستان کےساتھ سخت رویہ اپنایا، تنخواہ داروں پرٹیکس بڑھانے کی آئی ایم ایف کی تجویز قبول نہیں کی، آئی ایم ایف کےساتھ اس تجویزپربات چیت جاری ہے۔

شوکت ترین نے ورچوئل گفتگو میں کہا کہ امیدہےاس بارجون میں ہم فیٹف سےنکل آئیں گے، ہم نےفیٹف سےنکلنےکیلئےتمام کنڈیشن پوری کردی ہیں، سبسڈی کوکم کرناہےزیادہ نہیں، ہم خسارےکوبڑھنےنہیں دیں گے، یہ سب کچھ وقت کیساتھ ساتھ ہوگا۔

اپوزیشن کی جانب سے جاری اعداد وشمار پر وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ہمیں کسی چیز کو چھپانےکی ضرورت ہی نہیں، کسی کو اگر شک ہے تو آکر نمبرزدیکھے، عمران خان وہ شخص ہیں جو نیوٹرل امپائرز لے کر آئےتھے۔

شوکت ترین نے کہا کہ ریونیو کو بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔ جوٹیکس نہیں دے رہے ان کے خلاف کارروائی کریں گے۔ غریبوں کوآٹےاوربجلی پرسبسڈی دیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ حکومت نےایکسپورٹ انڈسٹری، زراعت اور تعمیرات سیکٹر پر زیادہ توجہ دی، وزیراعظم کی بہترپالیسی کی وجہ سے کرونا کے باعث معیشت کو زیادہ نقصان نہیں ہوا، حکومت کی توجہ اب مہنگائی کم کرنے پر ہوگی۔

شوکت ترین کا ان کا کہنا تھا کہ 12سیکٹرز کی طویل اورقلیل مدتی منصوبوں کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔ زراعت کے حوالے سے قلیل المدتی منصوبوں پر کام ہو رہا ہے۔

حکومت عام آدمی کیلئےمختلف اسکیمزلےکرآرہی ہے۔ ایکسپورٹ میں مزید اضافے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔اوورسیز پاکستانیوں نے پاکستان میں ریکارڈ پیسے بھجوائے جس نے ملکی معیشت کو سہارا دیا۔

شوکت ترین کا کہنا تھا کہ امیر اورغریب کیلئے ایک جیسی گروتھ ہونی چاہیے، ریونیو کو بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔ جوٹیکس نہیں دے رہےان کےخلاف کارروائی کریں گے، غریبوں کو آٹے اور بجلی پرسبسڈی دیں گے

Comments

یہ بھی پڑھیں