The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کا ماڈل حدیبیہ کیس کی طرح لگتا ہے: فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کا ماڈل اگر دیکھیں تو یہ حدیبیہ کیس کی طرح لگتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق فواد چوہدری نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کا ماڈل حدیبیہ کیس لگتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملازموں کے ناموں پر رقم باہر بھجواتے اور پھر منگوائے جاتے تھے، فرنٹ مین کے ذریعے رقم باہر بھجوائی گئی اور پھر منگوائی گئی، ثبوت دیکھیں تو پتا لگتا ہے بلین ڈالرز سے شریف فیملی نے فائدہ اٹھایا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ حمزہ شہباز جیسے بڑے کیسز کو منطقی انجام تک پہنچنا چاہیے، یہ نہیں ہو سکتا کہ امیر کے لیے الگ اور غریب کے لیے الگ قانون ہو، ہم چاہتے ہیں ایسے مقدمات جلد از جلد منطقی انجام تک پہنچیں۔

یہ بھی پڑھیں:  حمزہ شہباز کس طرح منی لانڈرنگ کرتے رہے، نیب نے ثبوت حاصل کر لیا

خیال رہے کہ نیب نے دعویٰ کیا تھا کہ حدیبیہ پیپز ملز کیس میں بھی اسی طرح اکاؤنٹس کھولے گئے تھے جن کے ذریعے منی لانڈرنگ کی گئی، تاہم نیب سپریم کورٹ میں منی لانڈرنگ ثابت نہیں کر سکی تھی۔

واضح رہے کہ پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کس طرح منی لانڈرنگ کرتے رہے، نیب نے اس کے ثبوت حاصل کر لیے ہیں، حمزہ شہباز کو نا معلوم افراد کی جانب سے لاکھوں ڈالرز کی رقم بھیجی گئی۔

آج احتساب عدالت کے حکم پر نیب پولیس اور رینجرز اہل کاروں کے ساتھ پنجاب اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کو پھر گرفتار کرنے ان کے گھر پہنچی تو وہ گھر سے باہر نہ نکلے، بعد ازاں لاہور ہائی کورٹ نے پیر تک حمزہ شہباز کی گرفتاری روک دی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں