The news is by your side.

Advertisement

تحریک عدم اعتماد پر واپس گئے تو بحران بڑھےگا، فواد چوہدری

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری نے کہا ہے کہ چند ہفتے کے کرائسز سے تباہی کے دہانے پر پہنچ چکے ہیں، تحریک عدم اعتماد پر واپس گئے تو بحران بڑھے گا۔

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری نے کہا ہے کہ چند ہفتے کے کرائسز سے تباہی کے دہانے پر پہنچ چکے ہیں، اپوزیشن کی وجہ سے ڈالر اپنی حد سے تجاوز کرچکا ہے، تحریک عدم اعتماد پر واپس گئے تو بحران بڑھے گا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما وسابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا کہ رولنگ صحیح ہے یا غلط اس پر وہ مواد دیکھنا ہوگا جو اسپیکر کے سامنے تھا، پہلے جج صاحبان وہ مواد دیکھیں، آپ رولنگ کوغلط قرار دینا چاہتے ہیں تو ان کیمرہ پروسیڈنگ ہونی چاہیے، شہادتیں ججز کے سامنے رکھنی چاہئیں جس سے وہ کسی فیصلے پر پہنچیں۔

انہوں نے کہا کہ عدالتوں نے پارلیمانی کارروائی میں کبھی بھی مداخلت نہیں کی، کرمانی کیس میں پارلیمنٹ میں ووٹرز برابر تھے، 2 ووٹرز کو فزیکلی روکا گیا کہ ووٹ کاسٹ نہ کرسکیں جس سے نتیجہ بدلا، جعلی ووٹ پڑے تو بھی سپریم کورٹ نے کہا مداخلت نہیں کرسکتے۔

پی ٹی آئی رہنما نے یہ بھی کہا کہ رولنگ کا معاملہ طے نہیں ہوسکتا جب تک ان کیمرہ سماعت میں چیزیں دیکھ نہ لیں، جوڈیشل کمیشن بننا چاہیے جو دھمکی آمیز خط کی تحقیقات کرے اور دیکھے کہ کیا خط ہے یا نہیں، دھمکی دی گئی یا نہیں، کیا اس خط میں رجیم نے سازش بنائی ہے یا نہیں، پارلیمنٹیرینز نے کن کن لوگوں سے ملاقاتیں کیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اب سپریم کورٹ فیصلہ بدلتی ہےتو یہ 400 سال پرانے فیصلوں سے برعکس ہوگا، حکومت کی تبدیلی کامیاب ہوئی تو ہم 23 مارچ 1940 میں واپس چلے جائیں گے، پاکستان کی غلامی کا دورشروع ہوجائے گا، جس طرح قائداعظم نے آزادی کی تحریک لڑی تھی اسی طرح اب قوم کو دوبارہ کھڑا ہونا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں