The news is by your side.

Advertisement

وہ ممالک جہاں آتش زدگی کے باعث اموات کی شرح کم ہے

آتش زدگی کے واقعات اور اس کے نتیجے میں ہلاکتیں ترقی پزیر ملکوں میں عام ہیں جس کی مختلف وجوہ ہیں۔ غیر ذمہ داری اور انسانی خطا کی وجہ سے کسی عمارت میں آگ لگنے کے علاوہ کئی واقعات کا سبب شارٹ سرکٹ، گیس یا تیل کا اخراج وغیرہ ہوسکتے ہیں جس کے بعد آگ بھڑکنے سے انسانی جانیں ضائع ہوئیں۔ تاہم پاکستان جیسے ملکوں میں ایسے حادثات اور ہنگامی صورتِ حال سے نمٹنے میں مشکلات پیش آتی ہیں اور ہلاکتوں کی شرح زیادہ ہے۔ اکثر حادثے کی جگہ بروقت فائر بریگیڈ کا نہ پہنچنا جانی و مالی نقصان میں اضافے کا سبب بنتا ہے۔

دنیا بھر میں آتش زدگی کے واقعات ہوتے رہتے ہیں، لیکن ترقی یافتہ ممالک میں حفاظتی اقدامات اور انسانی جانیں بچانے کے لیے فوری اور مؤثر کارروائی کی وجہ سے نقصان کم سے کم ہوتا ہے۔ ہم آپ کو ان چند ملکوں کے بارے میں بتا رہے ہیں جو اس حوالے سے سب سے کم متاثر ہوتے ہیں۔

آتش زدگی کے واقعات اور اس میں انسانی جانوں کے ضیاع سے متعلق اعداد و شمار میں تبدیل ہوتے رہتے ہیں۔ تاہم ایک عام جائزے کے مطابق فن لینڈ میں ہر دس لاکھ کی آبادی میں سے سالانہ 18 ہلاکتیں آتش زدگی کی وجہ سے ہوتی ہیں۔ یونان، ہنگری اور جاپان کا نمبر فن لینڈ کے بعد آتا ہے۔ جاپان میں ہر دس لاکھ کی آبادی میں سے 16 افراد آتش زدگی کے واقعات میں جان کی بازی ہار جاتے ہیں۔

دنیا کے سب سے زیادہ مطمئن اور خوش رہنے والے ناروے کے باسی ہیں۔ وہاں آگ لگنے کے واقعات میں سالانہ 14، ڈنمار ک میں 13 ہلاکتیں ہوتی ہیں۔

امریکا میں ہر دس لاکھ کی آبادی میں آتش زدگی کے نتیجے میں موت کا شکار ہو جانے والوں کی تعداد 12 ہے۔ اس کے بعد سویڈن، کینیڈا اور فرانس کا نمبر ہے جہاں ہر دس لاکھ کی آبادی میں سے آتش زدگی کی وجہ سے موت کے منہ میں جانے والوں کی تعداد 10 بتائی جاتی ہے۔ نیوزی لینڈ میں 8 افراد جب کہ برطانیہ، جرمنی، اسپین، آسٹریلیا، اٹلی میں یہ تعداد مزید کم ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں