The news is by your side.

Advertisement

روس کے ساتھ ہمارے دوطرفہ تعلقات ایک نیارخ اختیار کر رہے ہیں، وزیرخارجہ

اسلام آباد : وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی کا کہنا ہے کہ روس کےساتھ ہمارےدوطرفہ تعلقات ایک نیارخ اختیار کر رہےہیں، روس بھارت کو افغانستان  میں قیام امن کیلئے مثبت کردارادا کرنے پر آمادہ کرسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے روسی وزیرخارجہ کےدورہ پاکستان پر اپنے بیان میں کہا کہ مجھےخوشی ہے کہ روسی وزیرخارجہ پاکستان تشریف لارہےہیں، میں ان کےخیرمقدم کیلئےخودایئرپورٹ جاؤں گا، یہ کسی روسی وزیرخارجہ کا9سال کےبعدپاکستان کادورہ ہے۔

شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا کہ روسی وزیرخارجہ کادورہ2روزپرمشتمل ہے، وہ وزارت خارجہ میں وفود کی سطح پر مذاکرات میں شریک ہوں گے، جس میں تجارت کے فروغ سے متعلق بات چیت ہوگی جبکہ وزیراعظم اور آرمی چیف سے ملاقات بھی کریں گے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ روس اس خطےکاانتہائی اہم ملک ہے، روس کےساتھ ہمارےدوطرفہ تعلقات ایک نیارخ اختیار کر رہےہیں، ہمارے دو طرفہ تعلقات میں بہتری آرہی ہے اور ہم ایک دوسرےکےساتھ خطےمیں تعاون کاارادہ رکھتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ نارتھ ساؤتھ گیس پائپ لائن منصوبےکوہم دونوں آگےبڑھاناچاہتےہیں، جب آٹےکابحران پیدا ہوا تو روس نے ہمیں بروقت گندم فراہم کی ، اسٹیل مل روس نےلگائی تھی، اگرمل بحالی کیلئےسرمایہ کاری کی صورت نکل آئےتوتعاون بڑھانے کے مواقع میسر آسکتے ہیں۔

شاہ محمودقریشی نے مزید بتایا کہ پاکستان اورروس مل کرافغان امن عمل میں کرداراداکررہےہیں، 18مارچ کو ماسکو میں سہ فریقی اجلاس ہوا، پاکستان نےشرکت کی، دوشنبےمیں میری سفیرضمیرکابلوف کےساتھ ملاقات ہوئی، ضمیر کابلوف کےساتھ افغان امن عمل میں صورتحال پرتبادلہ خیال ہوا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ روس کے وزیرخارجہ دلی سے ہو کر آرہے ہیں، ہندوستان کےساتھ روس کے دیرینہ تعلقات ہیں، روس بھارت کوافغانستان میں قیام امن کیلئےمثبت کرداراداکرنےپرآمادہ کرسکتاہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں