The news is by your side.

Advertisement

کرتارپور راہداری منصوبے پر پاکستان نے 50 فیصد سے زیادہ کام مکمل کرلیا: دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا ہے کہ کرتار پور راہداری منصوبے پر پاکستان نے 50 فیصد سے زیادہ کام مکمل کرلیا ہے، بھارت کے ساتھ کچھ معاملات پر تاحال اتفاق رائے نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا ہے کہ کرتار پور راہداری منصوبے پر پاکستان نے 50 فیصد سے زیادہ کام مکمل کر لیا ہے، بھارت کے ساتھ کچھ معاملات پر تاحال اتفاق رائے نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹیکنیکل مذاکرات میں دریا پر پل کی تعمیر سمیت دیگر تکنیکی پہلوؤں کا جائزہ لیا جائے گا۔ کرتار پور راہداری کے لیے ٹرمنلز اور سڑکوں کی تعمیر پر خاطر خواہ کام ہوچکا ہے، بتایا گیا ہے کہ بھارت کی جانب سے بھی انفراسٹرکچر تعمیر کا کام جاری ہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ بھارت کے ساتھ کچھ معاملات پر تاحال اتفاق رائے نہیں ہے۔ بھارت 5 ہزار سکھ یاتریوں کی روزانہ کی بنیاد پر آمد چاہتا ہے۔ پاکستان کے لیے ایک روز میں اتنے زیادہ یاتریوں کے لیے انتظامات کرنا مشکل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارت سکھ یاتریوں کی پیدل گردوارہ دربار صاحب آمد کا خواہش مند ہے، پاکستان گاڑیوں کے ذریعے گردوارہ دربار صاحب پہنچانے کا خواہش مند ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان نے کرتار پور راہداری کی تعمیر سے متعلق مذاکرات کے لیے بھارت کی تجویز منظور کرلی ہے، پاک بھارت تکنیکی ماہرین کا اجلاس 16 اپریل کو ہوگا۔

دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان چاہتا ہے کہ بابا گرو نانک کے 550 ویں یوم پیدائش سے قبل کرتار پور راہداری کی تعمیر مکمل ہو جائے، پاکستان نے تعمیری رابطوں کے جذبہ کے تحت بھارتی تجویز پر اتفاق کیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں