بھارت نے گزشتہ ایک سال میں1400بارلائن آف کنڑول کی خلاف ورزی کی، دفترخارجہ
The news is by your side.

Advertisement

بھارت نے گزشتہ ایک سال میں1400بارلائن آف کنڑول کی خلاف ورزی کی، دفترخارجہ

اسلام آباد : ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ بھارت نے گزشتہ ایک سال میں چودہ سوبارلائن آف کنڑول کی خلاف ورزی کی،  مسئلہ کشمیر صرف اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہوسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر فیصل نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ بھارتی فائرنگ سے30 پاکستانی شہری شہید اور100 سے زائد زخمی ہوئے اور ایک سال میں بھارت نے 1400 بار ایل او سی کی خلاف ورزی کی۔

ترجمان کا مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسزکی فائرنگ سے بارہ کشمیریوں کی شہادت کی پروز مذمت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ آسیہ انداربی سمیت تین خواتین کی دہلی کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں منتقلی بھی قابل مذمت ہے۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ مسئلہ کشمیر صرف اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہوسکتا ہے، بھارت کے لئے کشمیرکا خصوصی اسٹیٹس ختم کرنا مشکل ہوگا، بھارت نے ماضی میں بھی آرٹیکل پینتیس اے ختم کرنے کی کوشش کی لیکن ناکامی ہوئی۔

دفترخارجہ ترجمان کا کہنا تھا کہ شبیراحمدشاہ سمیت دیگر حریت رہنماؤں کی نظر بندی کی مذمت کرتے ہیں۔

حالیہ رپورٹ کے مطابق گزشتہ ماہ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے 21 کشمیریوں کو شہید جبکہ 310 افراد کو زخمی کیا تھا۔

دوسری جانب مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی دہشتگردی جاری ہے اور چوبیس گھنٹے میں شہید کشمیریوں کی تعداد پانچ ہوگئی ہے۔


مزید پڑھیں : مقبوضہ کشمیرمیں ایک ماہ کے دوران 21 کشمیری شہید


بارہ مولا میں بھارتی فورسزنے چادراورچاردیواری کا تقدس پامال کیا اور گھروں میں گھس کرمتعددنوجوانوں کوگرفتارکرلیا جبکہ علاقے کی ناکہ بندی کرکے زبردستی دکانیں،تعلیمی ادارے بند کرا دئیے اور انٹرنیٹ اورموبائل سروس بھی بند کردی گئی۔

یاد رہے چند روز قبل دفترخارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں ہونے والے عام انتخابات کیخلاف بھارتی میڈیا زہر اگلنا بند کرے، اور اپنے داخلئی معاملات پر توجہ دے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں