The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب سے 3200 پاکستانیوں‌ کو مفت واپسی کی سہولت دی، وزارت خارجہ

اسلام آباد: وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں 26 لاکھ سے زائد پاکستانی مقیم ہیں تاہم وہاں پریشانی کا شکار ہونے والے پاکستانیوں کی تعداد صرف 8 ہزار ہے، 3200 پاکستانیوں کو واپسی کے لیے مفت سہولت اور مقدمات کا شکار 2100 پاکستانیوں کو قانونی معاونت فراہم کی۔

یہ پڑھیں: سعودی عرب سے نکالے گئے20 پاکستانی وطن پہنچ گئے

یہ بات وزارت خارجہ نے سینیٹ کے ارکان کی جانب سے پوچھے گئے سوالات کے تحریری جوابات میں بتائی۔ یہ جواب سینیٹ کے اجلاس کی کارروائی کے تحریری ایجنڈا میں شامل تھے۔

تحریری جواب میں بتایا گیا کہ سعودی عرب میں 26 لاکھ سے زیادہ پاکستانی مقیم ہیں جن میں سے8 ہزارمتاثر ہوئے، سعودی عرب میں موجود پاکستانی مشن نے 2200 مزدوروں کو دوسری کمپنیوں میں ملازمت حاصل کرنے کی سہولت فراہم کی۔

اسی طرح مشن نے فائنل ایگزٹ کرنے والے 3200 ورکرز کو پاکستان میں جلد واپسی کے لیے مفت واپسی کی سہولت دی ، 2100 ایسے متاثرہ ورکرز کو قانونی معاونت فراہم کررہےہیں جنہیں سعودی عرب میں مقدمات کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: سعودی حکومت کا غیرملکیوں کو 24 گھنٹے میں ویزا دینے کا اعلان

وزارت خارجہ نے بتایا کہ متاثرہ 8 ہزار پاکستانی میں سے کچھ ورکرز کی واپسی کے لیے تعاون کیا گیا جبکہ کچھ کو ملازمتیں دلوانے کے ساتھ ساتھ خاندانوں کو رقوم بھی فراہم کی گئی۔

معاشی خسارے کے ابتدا ء ہی میں ریاض اور جدہ کے ورکرز میں 25000 سعودی ریال تقسیم کیے گئے تھے، 5500 ورکرز کو تنخواہ نہ ملنے پر ان کے خاندانوں کو 50000 روپے کے حساب سے 500 ملین روپے ادا کیے گئے ۔

حکام نے ایوان کو بتایا کہ سعودی عرب میں پاکستانی مشن نے 401 ورکرز میں فی ورکر کو 200 سعودی ریال ادا کیے ، مشن نے بطور فوڈ الاؤنس حال ہی میں 500 ورکرز کے درمیان فی ورکر 150 سعودی ریال کے حساب سے تقسیم کیے۔

اسی سے متعلق: سعودی عرب میں غیر قانونی مقیم پاکستانی بدنامی کا باعث ہیں، وزارت خارجہ

یاد رہے قبل ازیں وزارت خارجہ نے کہا تھا کہ سعودی عرب میں غیر قانونی طور پر مقیم پاکستانی رسوائی کا سبب بن رہے ہیں، صرف جدہ سے ہر سال 40 ہزار پاکستانیوں کو ملک بدر کیا جاتا ہے۔

اسی ضمن میں: سعودی عرب میں 780 پاکستانی قید ہیں،ترجمان دفتر خارجہ

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں