The news is by your side.

Advertisement

پاکستان سے ہندوستان جانے والی گیتا کو حقیقی ماں مل گئی

کراچی : پاکستان میں 13سال رہ کر بھارت واپس جانے والی گیتا کو بالآخر اپنی ماں مل گئی، گیتا چھ سال قبل اپنے وطن بھارت گئی تھی۔

چھ سال قبل پاکستان سے ہندوستان جانے والی قوت سماعت اور گویائی سے محروم لڑکی گیتا کو آخرکار اپنی حقیقی ماں مل ہی گئی، گیتا کو 2015 میں اس وقت کی وزیر خارجہ سشما سوراج کی ایما پر ہندوستان بھیجا گیا تھا۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ گیتا کا اس اصل نام رادھا واگھمارے ہے اور اس کی حقیقی والدہ ریاست مہاراشٹر کے نیگاؤں کی رہائشی ہیں۔

ایدھی ویلفیئر ٹرسٹ کے بانی عبدالستار ایدھی مرحوم کی اہلیہ بلقیس ایدھی نے بتایا کہ گیتا کو ڈی این اے معلومات سے اس کے اصل والدین کا پتا لگایا گیا اور پھر مہاراشٹر میں اس کی حقیقی ماں سے ملا دیا گیا ہے۔

بلقیس ایدھی نے کہا کہ وہ میرے رابطے میں تھی اور اسی ہفتےاس نے مجھے اپنی حقیقی ماں سے ملنے کی خوشخبری سنائی، انہوں نے پریس ٹرسٹ آف انڈیا  (پی ٹی آئی) سے اس کی تصدیق کی ہے۔

بلقیس ایدھی کا کہنا تھا کہ گیتا کو اپنے اصل والدین کو ڈھونڈنے میں تقریباً 4 سال کا وقت لگا اور اس کی تصدیق ڈی این اے ٹیسٹ سے کی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ گیتا کے اصل والد کا کچھ عرصہ قبل انتقال ہوچکا اور اور اس کی ماں مینا نے دوسری شادی کرلی ہے۔

واضح رہے کہ تقریباً9سالی کی عمر میں گیتا پاک بھارت سرحد کے قریب مندر میں اپنے والدین کے ساتھ آئی تھی، بھیڑ میں گیتا اپنے گھروالوں سے بچھڑ کر پاکستان بارڈر پار کرگئی، جہاں پولیس نے گیتا کو پکڑ کر ایدھی سینٹر کے حوالے کردیا تھا، گیتا پندرہ سال سے ایدھی فاونڈیشن میں مقیم تھی جہاں اس کا بھرپور خیال رکھا گیا ۔

گیتا کی ایدھی ہوم میں بہت ساری سہیلیاں تھیں جن کیساتھ وہ اپنے سکھ دکھ بانٹتی تھی، گیتا کیلئے چھوٹا سا مندر بھی بنایا گیا تھا ،جہاں وہ پوجا کرتی تھی، کچھ روز پہلے گیتا نے اپنے خاندان کو تصویر میں دیکھ کر پہچانا تھا،۔

مزید پڑھیں : بھارتی حکام کو والدین نہ مل سکے مگر گیتا کیلئے رشتے مل گئے 

گیتا کے خاندان ملنے کی تصدیق بھارتی وزیرخارجہ سشما سوراج نے بھی کی تھی سشما سوراج کا کہنا تھا کہ ڈی این اے ٹیسٹ کے بعد گیتا کواس کے خاندان کے حوالے کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں