The news is by your side.

Advertisement

امریکا میں قاتل مچھر پھیلانے کا منصوبہ

امریکا میں مچھروں سے پھیلنے والی مختلف بیماریوں کو روکنے کے لیے جینیاتی طور پر مختلف مچھروں کی افزائش کی گئی ہے جنہیں ریاست فلوریڈا میں چھوڑا گیا ہے۔

بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق امریکا نے جینیاتی طور پر مختلف مچھروں کی ایک نسل تیار کی ہے، جسے ریاست فلوریڈا میں خطرناک مچھروں کے خاتمے کے لیے چھوڑا گیا ہے۔

اس منصوبے کا مقصد عام مچھروں سے پیدا ہونے والے امراض جیسے زیکا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔

ماہرین کے مطابق مچھر کئی سنگین امراض کا سبب بنتے ہیں جن میں ڈینگی، زیکا، چکن گونیا، ملیریا اور زرد بخار شامل ہیں۔ امریکا میں کیڑے مار ادویات کا بڑے پیمانے پر استعمال ہوتا ہے، اس لیے اب مچھروں میں ان ادویات کے خلاف مدافعت پیدا ہو چکی ہے اور یہی وجہ ہے کہ ایک جینیاتی طور پر مختلف مچھر بنایا گیا ہے۔

اس مچھر کے تجربات پاناما اور برازیل سمیت مختلف مقامات پر پہلے ہی کیے جا چکے ہیں۔

منصوبے کے تحت پہلے مرحلے میں فلوریڈا میں ہر ہفتے 12 ہزار جینیاتی طور پر مختلف مچھر چھوڑے جائیں گے جن کی تعداد 1 لاکھ 44 ہزار ہوگی۔

3 مختلف مقامات پر ان مچھروں کے انڈے رکھے جا چکے ہیں جن میں سے رواں ہفتے مچھر نکل آئیں گے۔ اس مچھر کی مدد سے بیماریوں کا سبب بنے والے مچھر کی آبادی کو گھٹانا اور امراض کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں