The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کی مشکلات میں اضافہ : اٹارنی جیفری برمن کا عہدے چھوڑنے سے انکار

واشنگٹن : ڈسٹرکٹ اٹارنی جیفری برمن کی برطرفی کے بعد امریکہ میں ایک بحث چھڑ گئی ہے، ٹرمپ کی جانب سے اس اقدام پر انہوں نے سینیٹ سے نئی نامزدگی تک عہدے چھوڑنے سے انکار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ اٹارنی جیفری برمن کی برطرفی سے امریکہ میں نیا تنازع کھڑا ہوگیا، صدر ٹرمپ نے ڈسٹرکٹ اٹارنی جیفری برمن کو عہدے سے برطرف کردیا تھا، جس پر اٹارنی جیفری برمن نے سینیٹ سے نئی نامزدگی تک عہدے چھوڑنے سے انکار کردیا ہے۔

دوسری جانب امریکی کانگریس کے ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پیلوسی نے اس معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے، مسز نینسی نے کا کہنا ہے کہ اٹارنی برمن کے مستعفی ہونے کی وجہ بیان نہیں کی جاسکتی ہے اور بجائے اس کی بنیاد اور ناجائز مقاصد کی طرف اشارہ کیا جاسکتا ہے۔

واضح رہے کہ جیفری برمن صدر ٹرمپ کے قریبی ساتھیوں کیخلاف تحقیقات کررہے تھے، اس حوالے سے امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ اٹارنی جیفری برمن کو تحقیقات سےروکنے کیلئے برطرف کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ کے محکمہ انصاف کے ذریعہ جمعہ کو جاری اپنے ایک بیان میں بار نے کہا کہ برمن ڈھائی سال نیو یارک کے جنوبی ضلع میں اٹارنی کی حیثیت سے خدمات انجام دینے کے بعد اپنے عہدے سے استعفی دے رہے ہیں۔ اس بیان کے فورا بعد ہی برمن نے ایک بیان جاری کیا جس میں کہا گیا تھا کہ انہوں نے اپنے عہدہ سے استعفیٰ نہیں دیا ہے۔

انہوں نے ٹوئٹ کیا کہ میں نے استعفیٰ نہیں دیا ہے اور میں مستعفی ہونے کا ارادہ نہیں رکھتا۔ جب سینیٹ کے ذریعہ مجوزہ امیدوار کو صدر نامزد کردیا جائے گا تو میں استعفیٰ دے دوں گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں