The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب کو جرمن اسلحہ خریدنے کی اجازت مل گئی

ریاض: جرمنی نے صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے بعد سعودی عرب پر جرمن اسلحے کی خریداری پر عائد پابندی ختم کردی۔

تفصیلات کے مطابق سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے پیش نظر جرمن حکام نے سعودی عرب کو ذمہ دار ٹھراتے ہوئے جرمن اسلحے کی فروخت روک دی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے نے دعویٰ کیا ہے کہ جرمن حکام نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات جیسے ممالک کو جرمن اسلحہ برآمد کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

سعودی عرب پر یہ بھی الزام لگایا جاتا ہے کہ وہ یمن جنگ میں اتحادی افواج کے ساتھ مل کر عام شہریوں کے قتل عام میں بھی ملوث ہے، جبکہ ریاض حکومت اس کی تردید کرتی آئی ہے۔

حال ہی میں سعودی اتحادی افواج کی جانب سے یمن میں حوثی باغیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی گئی تھی جس کے باعث درجنوں عام شہری مارے گئے تھے۔

خیال رہے کہ جرمن حکام نے گذشتہ ماہ فیصلہ کیا تھا کہ سعودی عرب کو مزید چھ ماہ تک اسلحہ فروخت نہیں کیا جائے گا، مروجہ پابندی میں توسیع کردی گئی، البتہ ذرائع اب یہ دعویٰ کررہے ہیں کہ جرمنی سے سعودی عرب اسلحہ خرید رہا ہے۔

سعودی عرب کو مزید 6 ماہ تک جرمن اسلحہ فراہم نہیں کیا جائے گا

مذکورہ پابندی گزشتہ برس دو اکتوبر کو ترکی کے شہر استنبول کے سعودی قونصل خانے میں ریاض حکومت کے ناقد سعودی صحافی اور امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے کالم نگار جمال خاشقجی کے قتل کے بعد عائد کی گئی تھی۔

یاد رہے کہ شروع میں جرمنی نے سعودی عرب کو جرمن ساختہ اسلحہ جات کی ترسیل پر یہ پابندی دو ماہ کے لیے لگائی تھی، جس کے بعد وفاقی جرمن حکومت نے مزید توسیع کر دی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں