The news is by your side.

Advertisement

لاک ڈاؤن میں نرمی: بھارت اور چین میں سونے کی طلب میں اضافہ

نئی دہلی / بیجنگ: بھارت اور چین میں کرونا وائرس کے لاک ڈاؤن میں نرمی آنے کے بعد سونے کی خریداری میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق بھارت اور چین میں رواں ہفتے سونے کی مانگ میں اضافہ دیکھنے میں آیا تاہم ڈیلروں کو اب بھی ڈسکاؤنٹ دینے پر مجبور کیا گیا تھا۔

بھارت میں کووڈ 19 کی پابندیوں میں نرمی کے بعد کاروبار میں کچھ بہتری کے آثار نظر آئے ہیں۔ بھارت کی کچھ ریاستوں میں کرونا انفیکشن کی شرح کم ہونے کے بعد پابندیوں میں نرمی آنا شروع ہو گئی ہے۔

ممبئی بلین ڈیلر کے ریڈھی سیدھی بلینز کے ڈائریکٹر مکیش کوٹھاری نے کہا کہ کچھ ریاستوں میں بتدریج کاروبار کھل رہے ہیں، چونکہ کرونا وائرس کے نئے کیسز میں کمی آرہی ہے، توقعات یہ ہیں کہ زیادہ تر ریاستیں اگلے چند ہفتوں میں پابندیوں میں نرمی کر دیں گی۔

سونے کے ڈیلروں نے سرکاری ڈومیسٹک قیمتوں پر 12 ڈالر فی اونس تک کی چھوٹ کی پیشکش کی جس میں 10.75 فیصد درآمد اور 3 فیصد سیلز لیویز شامل ہیں۔

پچھلے ہفتے سے اس میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی، وسط ستمبر 2020 کے بعد سے اس سطح پر رعایت نہیں دیکھی گئی۔

ممبئی میں سونے کے ایک دوسرے ڈیلر نے کہا کہ جیولرز شک میں تھے، وہ نہیں جانتے کہ ڈیمانڈ کتنی جلدی بحال ہوگی۔ اسی وجہ سے وہ اعلیٰ سطح پر خریداری کرنے میں دلچسپی نہیں دکھا رہے۔

بھارت میں جمعے کو مقامی سونے کے نرخ 49 ہزار 200 روپے فی 10 گرام رہے، بھارت میں مئی میں سونے کی درآمدات دگنی بڑھ کر 12 ٹن ہو گئی ہیں۔

چین میں کووڈ 19 کی سخت پابندیوں کے درمیان سونے کی رعایتی قیمت عالمی قیمت کے مقابلے میں 7 سے 12 ڈالر فی اونس ہوگئی۔

ایم کے ایس میں گریٹر چین کے ریجنل ڈائریکٹر برنارڈ سین نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ طلب جاری رہے گی اگرچہ فراہمی کم ہو جائے گی، چین پریمیم کی سطح پر دوبارہ تجارت کرے گا۔

سنگاپور کے ڈیلر گولڈ سلور سینٹرل کے منیجنگ ڈائریکٹر برائن لین نے کہا کہ ہم نے ریٹیل اور یہاں تک کہ ہول سیل سے بھی کم طلب دیکھی ہے۔

ڈیلرز کو اگلے ہفتے سے پابندیوں میں نرمی آنے کے بعد بہتر کاروبار کی امید ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں