The news is by your side.

Advertisement

حکومتی قرضوں کا حجم 32ہزار 130ارب روپے تک جا پہنچا

کراچی : اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ 5 ماہ میں قرضوں میں344ارب روپے کا اضافہ ہوا، جس کے بعد حکومتی قرضوں کاحجم میں32 ہزار 130ارب روپے تک جا پہنچا۔

تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک نے قرضوں سے متعلق کہا ہے کہ رواں مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں قرضوں میں 344ارب روپے کا اضافہ ہوا، نومبر کے اختتام پر حکومتی قرضوں کا حجم میں 32ہزار 130 ارب روپے ہوگیا۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق گزشتہ سال اسی عرصے میں قرضوں کا حجم 26ہزار 452 ارب روپے تھا، نومبر 2018سے نومبر 2019 قرضوں میں 5ہزار 678 ارب روپے اضافہ ہوا۔

یاد رہے چند روز قبل وزارتِ خزانہ نے گزشتہ ایک سال میں لیے گئے بیرونی قرضوں پر وضاحت جاری کی تھی ، جس میں بتایا گیا تھا وفاقی حکومت نے نومبر 2018 سے نومبر 2019 تک 3674 ارب روپے قرضہ حاصل کیا۔

مزید پڑھیں : ایک سال کے دوران حکومت نے کتنے ارب روپے قرض لیا؟ رپورٹ جاری

اعلامیے کے مطابق قرضہ مالی خسارے کو پورا کرنے کے لیے لیا گیا، نومبر2018 میں مرکزی حکومت کا قرضہ26,453ارب روپےتھا جبکہ یہ نومبر 2019 میں بڑھ کر 32،131 ارب روپے تک پہنچ گیا۔

وزارت خزانہ کے مطابق روپےکی قدرگرنےسے5678ارب کےمجموعی قرضےمیں1034ارب اضافہ ہوا جبکہ نومبر2018سےنومبر2019تک محفوظ رقم میں 970ارب روپےاضافہ ہوا، ایک سال کے دوران مجموعی قرضوں کا حجم بڑھ گیا۔

وزارت خزانہ نے مزید کہا تھا محفوظ رقم سے ہونے والا اضافہ کسی بھی ہنگامی صورتحال سےنمٹنےکےلئےرکھا گیا ہے اور وہ رقم بالکل محفوظ ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں