The news is by your side.

Advertisement

فوادچوہدری کے بیان پر حافظ حمداللہ کا سخت ردعمل

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کے جمعیت علماء اسلام ف اور مولانا فضل الرحمان ‏سے متعلق بیان پر حافظ حمداللہ کا ردعمل آگیا۔

ٹوئٹر پر جاری بیان میں حافظ حمداللہ نے لکھا کہ کے پی کے میں شرمناک اور عبرتناک شکست کو ‏چھپانے کیلئے جمعیت پر تنقید کرنے سے زائل نہیں کرسکتے۔

انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں جس وقت ‏JUI‏ کی حکومت تھی تب فواد چوہدری پیدا بھی ‏نہیں ہوئے تھے، فوادچوہدری کی پیدائش سےقبل مفتی محمود رح جیسی جمھوری شخصیت ‏تھےجنہوں نے پاکستان کو 1973ءکامتفقہ آئین دیا جس آئین پر مفتی محمود کےدستخط ہےاس ‏آئین کے تحت تم وزیر اور عمران خان وزیراعظم بن کے بیٹھےہیں آئین بنانے والی پارٹی جمعیت ‏کو انتہاءپسند کہنے والے خود انتہاء پسند اور شدت پسند ھے۔

‘پی ٹی آئی کمزور ہوئی تو ملک بھیڑیوں کے ہاتھ لگ جائیگا’

حافظ حمداللہ کا کہنا تھا کہ جمعیت کی قیادت مولانا فضل الرحمن آئین پارلیمنٹ اور جمہوریت ‏کی جنگ لڑتے لڑتے تین خودکش حملوں کا نشانہ بنے، دوہزار چودہ دھرنے کے دوران پارلیمنٹ پر ‏حملہ، پی ٹی وی پر حملہ، پولیس آفسر ، پرحملہ، سول نافرمانی کا اعلان انتہاءپسندی شدت پسندی، ‏دھشت گردی ،اور ریاست سے بغاوت نہیں ہے؟

Comments

یہ بھی پڑھیں