The news is by your side.

Advertisement

حجاجِ کرام آج شیطان کو کنکریاں مارنے کے بعد قربانی کریں گے

مزدلفہ : حجاج کرام آج مزدلفہ سے منیٰ جائیں گے ، شیطان کو کنکریاں مارنے کے بعد قربانی کر کے سر کے بال منڈوائیں گے اور احرام کھول کر عام لباس میں طواف اور سعی کریں گے۔

حجاج کرام نے رات مزدلفہ میں کھلے میدان میں گزاری اور مزدلفہ میں نماز فجر کی ادائیگی کے بعد منیٰ روانہ ہوئے، جہاں بڑے شیطان کو کنکریاں مارنے کا سلسلہ جاری ہے، رمی کے بعد حجاج جانور کی قربانی اور سر منڈواکر احرام کھولیں گے۔


مزید پڑھیں : شام کے مسلمانوں کی مدد اور نصرت کی جائے،امام کعبہ الرحمن السدیس


اس کے بعد مکہ مکرمہ جاکر مسجد الحرام میں طواف زیارت اور صفا و مروہ کے درمیان سعی کریں گے اور واپس منیٰ آجائیں گے اور مزید 2 دن قیام کریں گے،جہاں تینوں شیاطین کو کنکریاں ماریں گے۔


مزید پڑھیں : مکہ مکرمہ:غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرورتقریب


سعودی حکومت نے رمی کے دوران بھگدڑ یا کسی اور حادثے سے بچنے کے لئےخصوصی انتظامات کئے ہیں اور رمی کے اوقات میں کمی کردی ہے، جس کے مطابق حج میں عازمین کی حفاظتی تدابیر کے طور پر پہلے روز صبح چھ سے دن 10 بجے تک رمی جمرات پر پابندی ہوگی، دوسرے روز 2 بجے سے شام 6 بجے تک جب کہ تیسرے روز ساڑھے تین گھنٹے کی پابندی ہوگی اور یہ پابندی دن ساڑھے صبح دس بجے سے 2 بجے تک برقرار رہے گی۔


مزید پڑھیں : سعودی حکومت کی حج میں شیطان کو کنکریاں مارنے کے اوقات میں کمی


گذشتہ روز لاکھوں حجاج میدان عرفات کی مسجد نمرہ میں خطبہ حج سنا اور رکن اعظم وقوف عرفہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال منیٰ میں بھگدڑ کے واقعہ میں ایک ہزار سے زائد افراد جاں بحق ہوگئے تھے، جن میں 100 سے زائد پاکستانی بھی تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں