The news is by your side.

Advertisement

بیٹے کی لاش ملکھانوالا روڈ سے اٹھا لینا، پولیس اہل کار کی خاتون کو فون پر دھمکی

فیصل آباد: ’بیٹے کی لاش ملکھانوالا روڈ سے اٹھا لینا‘ یہ دھمکی فیصل آباد کے ایک پولیس ہیڈ کانسٹیبل نے فون پر ایک خاتون کو دی، جس کی بیٹی نے پولیس اہل کار سے شادی سے انکار کر دیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب کے شہر فیصل آباد کے علاقے تھانہ بٹالہ کالونی کے پولیس اہل کار اسد شعیب نے شادی سے انکار پر ایک لڑکی اور اس کی ماں کو سنگین دھمکیاں دینا شروع کر دی ہیں۔

ہیڈ کانسٹیبل اسد شعیب تھانہ بٹالہ کالونی میں تعینات ہے، جب کہ چمن زار کالونی کی رہائشی متاثرہ لڑکی نے سنگین دھمکیوں اور مسلسل ہراساں کرنے پر سی پی او کو درخواست دے کر تحفظ کا مطالبہ کر دیا ہے۔

اے آر وائی نیوز نے ہیڈ کانسٹیبل کی دھمکی آمیز کال کی ریکارڈنگ حاصل کر لی ہے، جس میں اہل کار اسد شعیب لڑکی کی والدہ کو ان کا بیٹا قتل کرنے کی دھمکی دے رہا ہے۔

خان پور: 7 ماہ قبل اغوا ہونے والی لڑکی نہ مل سکی

ہیڈ کانسٹیبل نے انکار کرنے والی لڑکی کی والدہ سے فون پر کہا میں تمھارے بیٹے کو قتل کر دوں گا، ملکھانوالا روڈ سے اس کی لاش اٹھا لینا، اگر اپنے بیٹے کو بچا سکتی ہو تو بچا لینا۔

دوسری طرف متاثرہ لڑکی نے میڈیا کو بتایا کہ پولیس اہل کار ان کے بھائی کا ہم زلف ہے، اور وہ ان سے شادی کرنا چاہتا ہے، لیکن شادی سے انکار پر وہ شراب پی کر زبردستی گھر میں گھس آیا تھا۔

لڑکی کا کہنا ہے کہ اہل کار اسد شادی نہ کرنے پر پورے خاندان کو قتل کی دھمکی دے رہا ہے، ہمیں پولیس ہی سے تحفظ حاصل نہیں، اعلیٰ حکام ہمیں انصاف دلائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں