The news is by your side.

Advertisement

کویت سے روانہ ہونے سے پہلے بھی ہوٹل بکنگ لازم قرار

کویت سٹی: کویت آنے سے قبل ہی نہیں، اب کویت سے روانہ ہونے سے قبل بھی واپسی کے لیے ادارہ جاتی قرنطینہ کے لیے ہوٹل کی بکنگ لازم قرار دے دی گئی۔

ڈائریکٹوریٹ سول ایوی ایشن کا کہنا ہے 21 فروری سے کویت سے روانہ ہونے والے تمام مسافروں کے لیے (کویتی شہری یا غیر ملکی) خواہ ان کے پاس ون وے ہوائی ٹکٹ ہو یا دو طرفہ، لازم ہے کہ وہ اپنی کویت واپسی پر 7 دن کے ادارہ جاتی قرنطینہ کے لیے پہلے ہوٹل کی بکنگ کریں۔

واضح رہے کہ مسافروں کی واپسی کی تاریخوں کےا بارے میں یقینی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا، اس صورت میں بھی قرنطینہ کے لیے ہوٹل کی بکنگ لازمی ہے، خواہ یہ ہوٹل بکنگ 5 ماہ بعد کی ہی کیوں نہ ہو۔

سول ایوی ایشن کا کہنا ہے کہ واپسی اگر بکنگ کی تاریخ کے مطابق نہ ہو، تو بھی اس بکنگ کو بعد کی تاریخ میں تبدیل کیا جا سکتا ہے۔ احکامات کے مطابق یہ قانون ان تارکین وطن پر لاگو نہیں ہوگا جو اپنا کویت کا رہائشی اقامہ منسوخ کر چکے ہیں۔

21 فروری سے کویت آنے والے مسافروں پر بڑی شرط عائد

ڈی جی سی اے کے ترجمان سعد العطیبی نے واضح کیا ہے کہ قرنطینہ کے لیے آن لائن ہوٹل کا انتخاب اور اخراجات کی ادائیگی کے بغیر کوئی بھی شہری یا تارک وطن ملک سے روانہ نہیں ہو سکتا۔

انھوں نے مزید کہا کہ یہ رقم قابل واپسی نہیں ہوگی، اور مسافر کو 7 دن تک جاری رکھے جانے والے ادارہ جاتی قرنطینہ مدت کے اخراجات سفر سے پہلے ادا کرنا ہوں گے۔

پہلی بار ملک آنے والوں کے سلسلے میں العطیبی نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پہلی بار آنے والے افراد کو ’کویت مسافر‘ ایپلی کیشن کے ذریعے قرنطینہ کے لیے کویت پہنچنے سے قبل کسی ہوٹل کی بکنگ کرنی ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں