The news is by your side.

Advertisement

کرونا وبا: والدین نے بیٹی کی سال گرہ کیسے منائی؟

یوراگوئے: جنوبی امریکی ملک میں کرونا وبا کے دوران ایک انوکھی سال گرہ نے لوگوں کی توجہ کھینچ لی، والدین نے بیٹی کو خوش کرنے کے لیے انوکھا انداز اختیار کرتے ہوئے انسانی کیک تیار کر لیا۔

سال گرہ مناتے ہوئے 15 سالہ اینا کلارا جذباتی ہو کر رو پڑی

تفصیلات کے مطابق یوراگوئے کے دارالحکومت مونٹی ویڈیو میں والدین نے اپنی بیٹی کی 15 ویں سال گرہ انوکھے انداز میں منائی، سال گرہ کا تحفہ دیکھ کر ان کی بیٹی جذباتی ہو کر رو پڑی۔

اینا کلارا کے دوست اور محلے والے انسانی کاسٹیوم کیک کے گرد رقص کر کے خوشی کا اظہار کر رہے ہیں

الیگزز اور ان کی بیوی اسٹیلا نے مل کر بیٹی اینا کلارا کی 15 ویں سال گرہ منانے کے لیے انسانی کیک کاسٹیوم تیار کیا، جس نے گلیوں میں گھوم پھر کر کلارا کی سال گرہ کو چار چاند لگا دیے۔

کرونا وبا کے دوران گھر سے باہر محلے میں سال گرہ منائی جا رہی ہے

واضح رہے کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے خطرے کے باعث بڑی تقریبات پر پوری دنیا میں پابندی عائد ہے، تاہم یوراگوئے کی اس فیملی نے سال گرہ گھر سے باہر محلے میں منائی، جس میں محلے والے بھی شریک ہوئے اور وہ دل چسپی سے اس تقریب کا حصہ بنے، تاہم لوگوں نے ماسک پہن رکھے تھے۔

بیٹی کی سال گرہ کے لیے انسانی کاسٹیوم کیک گھر لاتے ہوئے

اینا کلارا کے دوستوں اور محلے والوں نے انسانی کیک کے گرد رقص بھی کیا اور تقریب کا خوب لطف اٹھایا۔

یوراگوئے میں والدین اپنی بیٹی کی خوشی کے لیے انسانی کاسٹیوم کیک تیار کر رہے ہیں

اس سلسلے میں میڈیا میں چھپنے والی دل چسپ تصاویر نے بھی لوگوں کی توجہ اپنی طرف کھینچی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں