The news is by your side.

Advertisement

کئی یورپی ممالک میں چھاپے، ہزاروں تارکین کو یورپ لانے والا بڑا نیٹ ورک پکڑا گیا

برسلز: یورپین پولیس حکام نے ہزاروں تارکین وطن کو یورپی ممالک اسمگل کرنے والے گروہ کو گرفتار کرلیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یورپین پولیس نے تارکین وطن کو امیر یورپی ممالک میں اسمگل کرنے والے گروہ کے خلاف بڑی کارروائی کی ہے، جس کے دوران آسٹریا، چیک ری پبلک، ہنگری، سلوواکیا اور رومانیہ میں چھاپے مارے گئے، کارروائی کے دوران 205 ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

آسٹریا کے وزیر داخلہ گیر ہارڈ کارنر کا کہنا ہے کہ ان کے ملک میں 92 گرفتاریاں ہوئی، جبکہ دیگر افراد ہنگری، رومانیہ، سلواکیہ اور جمہوریہ چیک سے پکڑے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ "منظم جرائم کے خلاف یہ ایک اہم کامیابی ہے، اور انسانی اسمگلر مافیا کے لیے بڑا دھچکا ہے۔”

تحقیقاتی حکام کا کہنا ہے کہ گروہ نے 2021 کے آغاز سے اب تک تقریباً 36 ہزار سے زائد شامی مہاجرین کو یورپی یونین میں اسمگل کیا ہے، گروہ تارکین کو ہنگری سے امیر یورپی ممالک منتقل کرنے کیلئے 3 ہزار سے ساڑھے 4 ہزار یورو وصول کرتا تھا، تارکین کو ہنگری سے پہلے آسٹریا کے دارالحکومت ویانا منتقل کیا گیا جاتا ہے، جہاں سے انہیں جرمنی، فرانس، بلیجیئم اور ہالینڈ روانہ کیا جاتا تھا۔

حکام کا کہنا ہے کہ گروہ نے انسانی اسمگلنگ کے ذریعہ 152 ملین یورو سے زائد رقم کمائی ہے، گروہ کا سرغنہ ایک 28 سالہ رومانیہ کا شہری ہے، جسے سب سے پہلے 4 مئی کو اس کے گھر سے گرفتار کیا گیا تھا۔ گروہ کا ہیڈکوارٹر ویانا میں قائم تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں