The news is by your side.

جرمنی میں تارکین وطن کی آمد : تعداد میں ریکارڈ اضافہ

برلن : جرمن حکام نے کہا ہے کہ رواں سال 24 فروری کے بعد سے یوکرین سے جرمنی میں داخل ہونے والے مہاجرین کی بڑی تعداد کی وجہ سے ملک کی آبادی اس سال اب تک کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے۔

جرمنی کے وفاقی ادارہ شماریات کے ترجمان نے کہا ہے کہ جنگ سے فرار ہونے والے یوکرینی باشندوں کی آمد نے 1992 اور 2015 کی طرح امیگریشن میں بے پناہ اضافہ کیا ہے۔

شینگن ویزا انفو ڈاٹ کام کی رپورٹ کے مطابق اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ2022 کی پہلی ششماہی میں جرمنی میں باشندوں کی تعداد پہلی بار 84ملین سے تجاوز کرگئی۔

ادارہ شماریات نے وضاحت کی کہ 2021 کے اختتام کے مقابلے میں آبادی میں 82,000 افراد یا 0.1 فیصد اضافہ ہو اور مزید یہ کہ یوکرین سے آنے والے پناہ گزینوں کی اکثریت خواتین اور بچوں پر مشتمل ہے۔

اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ جون2022 کے آخر میں جرمنی میں رہنے والی یوکرائنی خواتین اور لڑکیوں کی تعداد 2021کے آخر کے مقابلے میں 501,000 تک بڑھ گئی اور یوکرائنی مردوں اور لڑکوں کی تعداد میں 248,000کا اضافہ ہوا، اس کا مطلب ہے کہ2022 کی پہلی ششماہی میں تقریباً7 لاکھ 50ہزار یوکرینی جرمنی میں رہ رہے تھے۔

ادارہ شماریات نے اس بات پر زور دیا کہ 1992 کے بعد جب مشرقی یورپ میں سرحدیں کھل گئی تھیں اور یوگوسلاویہ میں جنگ چھیڑی گئی تھی اور 2015 سے جب تارکین وطن جرمنی چلے گئے تھے، اتنی وسیع آبادی میں اضافہ ریکارڈ نہیں کیا گیا۔

عام طور پر یہ خیال بھی کیا جاتا ہے کہ جرمنی کی طرح پولینڈ میں بھی آبادی میں نمایاں اضافہ ہوا ہے کیونکہ اس ملک نے یورپی یونین کے دیگر ممالک میں سب سے زیادہ یوکرائنی مہاجرین کو رجسٹر کیا ہے۔

اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 12ستمبر 2022 تک یوکرین سے تقریباً 1.4 ملین پناہ گزینوں نے پولینڈ میں عارضی تحفظ کے لیے اندراج کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں