site
stats
اہم ترین

عمران خان کا26 اپریل کوسندھ سے کرپشن کے خلاف تحریک شروع کرنے کااعلان

اسلام آباد: عمران خان نے کہا کہ میاں صاحب پہلے آپ بچتے آئے ہیں اب نہیں بچ پائیں گے، ہم آپ کا احتساب کریں گے۔

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیاست کی جدوجہد میں بیس سال ہوگئےمیں اگلے بیس سال کی تیاری کر رہا ہوں عوام نے جس طرح میری حوصلہ افزائی کی اس پرعوام کا مشکور ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ میں نے جب بھی عوام کو بلایا آپ لوگ جمع ہوئے، مجھے کسی چیز کی ضرورت نہیں تھی،آج بتانا چاہتا ہوں کہ سیاست میں کیوں آیا۔

کپتان نے کہا کہ ایک وقت تھا جب پاکستان ہر کھیل میں چیمپئن ہوتا تھا، میں کرکٹ کھیلتا تھا تو اس وقت غلامی کے اثرات تھے، انگلینڈ کرکٹ کھیلنے گیا تو سینیر پلیئرنے کہا عمران خان انگریزوں کوہرانہیں سکتے لیکن میں نے کرکٹ کھیلتے ہوئے بڑی بڑی ٹیموں کو شکست دی۔

سیاست میں آنے وجہ بتاتے ہوئے عمران خان نے بتایا کہ میں کبھی سیاست میں نہ آتا کیوں کہ میرے پاس سب کچھ تھا، اللہ نے مجھے میری سوچ سے بھی زیادہ دیا،اللہ نے مجھے ایمان کی طاقت دی، جب تحریک شروع کی تو چند لوگ میرے ساتھ تھے تحریک انصاف کےبانیان کو آج خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔

عمران خان نے کہا کہ کرپشن کے خلاف مزاحمت شروع ہوچکی ہے، پاکستان میں جمہوریت آگے جانے کے بجائے پیچھے جارہی ہے، کرپشن کرنے کیلئے باریاں لگی ہوئی ہیں، ہمارے ملک میں غریبوں کو لوٹا جا رہا تھا، عوام پرخرچ ہونےوالاپیسہ مگرمچھوں کے پیٹ میں جارہاہے۔

نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم سب پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ ظلم کا مقابلہ کریں، نوجوانوں اللہ پوچھےگاکہ تم نےظلم کےخاتمےکیلئےکیاکیا تو آپ کوجواب دیناہوگا،پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست بنانا ہے، پاکستان کو ایسا ملک بنائیں گے جو دنیا میں مثال بنے گا پاکستان اسلام کے نام پر بنایا گیا تھا،ایساپاکستان بنانا تھا جہاں ہم نےاقلیتوں کوبرابرکےحقوق دینےتھے۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ قوم جاگ گئی ہے ہم نے پاکستان کا نظریہ بچانا ہے جب پانامالیکس کا نام لیتا ہوں تو رائیونڈ میں تہلکہ مچ جاتا ہے آج یہاں ایساماحول ہے،جب رائیونڈ جائیں گے پھرکیا ہوگا، امید ہے میاں صاحب رائیونڈ  مارچ سے پہلے کمیشن قائم کر دیں گے۔

پناما لیکس پرنواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میاں صاحب ٹی وی پرآکرتقریرکرتےہیں اور مجھ پر الزام لگاتے ہیں تو مجھےبھی ترس آتاہے میاں صاحب مجھ سے نہ پوچھیں ،بین الاقوامی صحافیوں سے پوچھیں، آپ ہمیشہ بچ جاتے ہیں اب نہیں بچیں گے مہران اسکینڈل میں بھی آپ بچ گئے،آئی ایس آئی سے آپ نے پیسے لیے اور آپ بچ گئے، آف شور کمپنیوں میں میاں صاحب اور ان کے بچوں کا نام آیا ہے، میاں صاحب پاناما لیکس میں آپ کا نام آیا ہے۔

کپتان نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ عوام میاں صاحب سے جواب طلب کریں ، اگر حکمرانوں کا احتساب نہ کیاگیا تو ملک تباہی کی جانب جائے گا،لوگوں کو کھانا نہیں ملتا اور میاں صاحب میٹروبس سروس بناتے ہیں،کسان پس رہے ہیں اور میاں صاحب اورنج ٹرین بنا رہے ہیں، 33 فیصدبچوں میں خوراک کی کمی کے باعث بیماریاں ہیں، اورنج ٹرین اورمیٹرواس لئے بنائی جارہی ہیں کہ اس میں کمیشن کمایاجاسکے۔

انہوں نے کہا کہ ڈیوڈ کیمرون کو بھی اپوزیشن نے مستعفی ہونے کا کہا ہے، میاں صاحب آپ کو اثاثے ظاہر کرنے پڑیں گے میاں صاحب احتساب آپ کاہوگا،یہ نہ کہیں کہ200افرادکااحتساب کریں.

پناما لیکس کی تحقیقات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہم چیف جسٹس کی سربراہی میں انکوائری کمیشن چاہتے ہیں، آپ کااپناکمیشن ہوگااوراپنےٹی اوآرزرکھیں گےتوایسےنہیں چلےگا، میاں صاحب ثبوت تو آچکے ہیں اب جواب آپ نے دینا ہے، آپ کسی کوکرپٹ کہتےہیں تووہ جواب دیتاہے کہ آپ بھی کرپٹ ہیں، آئس لینڈ کےوزیر اعظم نے پارلیمنٹ میں آکر صفائی پیش کی، میاں صاحب آپ کیوں پارلیمنٹ میں نہیں آئےاورصفائی پیش کی، اپوزیشن کاکام ہےکہ وہ عوام کےٹیکس کےپیسےسےمتعلق سوال کرے، حکومت کا کام ہے کہ وہ ہمیں جواب دے ۔


PM Nawaz won't escape. We will hold him… by arynews

کپتان نے کہا کہ کرپشن کی نشاندہی اورتحقیقات کرنا حکومت کا کام ہے، صفائی پیش کرنےکےبجائے شوکت خانم اسپتال پرانگلیاں اٹھائی گئیں اپنی کرپشن چھپانے کیلئے شوکت خانم اسپتال پر الزام لگایا گیا، آپ 30سال سےحکومت کررہےہیں پنجاب میں ایک اسپتال نہیں بنایا، شوکت خانم اسپتال کے خلاف تحقیقات سے مجھے فائدہ ہوگا۔

خطاب کے آخر میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے 26 اپریل کوسندھ سے کرپشن کے خلاف تحریک شروع کرنے کااعلان کردیا، انہوں نے کہا کہ اتوار کورائے ونڈنہیں لاہورجاؤں گا۔

ایف نائن پارک میں پہنچنے والے پی ٹی آئی کے کھلاڑی کافی پُرجوش دکھائی دے رہے ہیں، جلسے میں لاہور، فیصل آباد، ملتان اور پشاور سمیت ملک کے مختلف شہروں سے قافلوں کی آمد جاری ہے۔

جلسے کے لیے سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں، پولیس کے ساتھ رینجرز اہلکار بھی ڈیوٹی دیں گے۔

جلسے کی مانیٹرنگ کیلئے کنٹرول روم بھی بنایا گیا ہے۔ تحریک انصاف کا جلسہ کے حوالے سے اسلام آباد انتظامیہ نےسکیورٹی انتظامات مکمل کر لئے۔ آٹھ ہزار سکیورٹی اہلکار فرائض سر انجام دیں گے ۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top