The news is by your side.

Advertisement

امریکا مخالف جذبات کو کم کیا یا بڑھایا؟ عمران خان کا بائیڈن انتظامیہ سے سوال

سابق وزیراعظم عمران خان نے حکومت تبدیلی کے معاملے پر امریکی صدر جو بائیڈن سے سوال اٹھا دیا ہے کہ بائیڈن انتظامیہ امریکا مخالف جذبات کو کم کیا یا بڑھایا ہے؟

سابق وزیراعظم اور پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر امریکی دفاعی تجزیہ کار ریبیکا گرانٹ کی غیر ملکی ٹی وی چینل کو انٹرویو کی ویڈیو شیئر کی ہے اور ساتھ ہی لکھا ہے کہ امریکا فرمانبردار اور کٹھ پتلی وزیراعظم چاہتا ہے۔ حکومت تبدیلی کی سازش پرشبہ ہے تو اس ویڈیو سے شکوک دور ہونےچاہئیں۔

عمران خان نے اپنے ٹوئٹ میں مزید لکھا ہے کہ ایک جمہوری طور پر منتخب وزیراعظم اور اسکی حکومت کو کیوں ہٹایا گیا ہے، واضح رہے کہ امریکا فرمانبردار اور کٹھ پتلی وزیراعظم کے طور پر چاہتا ہے۔

عمران خان نے مزید کہا کہ انہیں ایک ایسا کٹھ پتلی وزیراعظم چاہیے جو امریکا کے مطالبات تسلیم کرے اور پاکستان کو غیرجانبدارانہ انتخاب کی اجازت نہ دے، انھیں ایسا وزیراعظم چاہیے جو روس سے معاہدوں پر دستخط نہ کرے۔

سابق وزیراعظم نے اپنے ایک اور ٹوئٹ میں لکھا کہ امریکا کو ایسا وزیراعظم چاہیے جو چین سے اسٹریٹجک تعلقات کم کرے۔

عمران خان نے اپنے ٹوئٹ میں یہ بھی کہا کہ اگر کوئی وزیر اعظم خودمختاری، آزاد خارجہ پالیسی کا دعویٰ کرے گا تو اسے ہٹایا جائیگا، منتخب وزیراعظم کو ہٹاکر شہباز شریف جیسا مکار، گھٹیا وزیراعظم لایا جائیگا

عمران خان کے مطابق امریکاکی رجیم چینج سازش کی تصدیق جو اس مراسلے میں بھی واضح تھی واشنگٹن سے ہمارے سفیر نے بذریعہ مراسلہ امریکی اہلکار کی دھمکی کا بتایا تھا، یقیناً چیف جسٹس کافرض بنتا ہےکہ وہ کمیشن بنائیں جو عوامی سماعت کرے۔

سابق وزیراعظم نے مطالبہ کیا کہ چیف جسٹس کمیشن بنائیں جو عوامی سماعت کرے اور تعین کرے کہ اس سازش میں کون کون شامل تھے۔

عمران خان نے کہا کہ جیسے رجیم چینج کرکے200ملین سےزائدآبادی والے ملک کے وزیر اعظم کو ہٹایا گیا اور ایک کٹھ پتلی وزیر اعظم لایاگیا، بائیڈن انتظامیہ سےسوال ہے کیا امریکا مخالف جذبات کو کم کیا یا بڑھایا؟

Comments

یہ بھی پڑھیں