The news is by your side.

Advertisement

بھارتی کسانوں کا مودی سے نفرت کا اظہار

نئی دہلی: بھارت میں متنازع زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کرنے والے کسانوں نے 6 ماہ مکمل ہونے پر آج ملک بھر میں یومِ سیاہ منایا، مظاہرین نے مودی کے پتلے پر لاٹھیاں برسائیں اور پھر اسے نذر آتش کیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارت میں متنازع زرعی قوانین کے خلاف جاری احتجاج کو 6 ماہ مکمل ہونے پر آج کسانوں نے حکومت کے خلاف یوم سیاہ منایا۔

بھارتی کسانوں نے حکومت کے خلاف احتجاج ریکارڈ کرانے کے لیے اپنے گھروں اور ٹریکٹرز پر سیاہ پرچم لہرائے۔

ایک روز قبل سکھ رہنما اور بھارتی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان نوجوت سنگھ سدھو نے احتجاج ریکارڈ کراتے ہوئے اپنے گھر پر سیاہ پرچم لہرایا اور کہا کہ  مودی حکومت پنجاب کی ترقی کو روکنا چاہتی ہے۔

ویڈیو دیکھیں: سدھو نے مودی حکومت کے خلاف آواز اٹھا دی

اُن کا کہنا تھا کہ ’6 ماہ کیا، اتنے یا اس سے زیادہ سال بھی لگ جائیں، احتجاج جب تک جاری رہے گا جب تک حکومت متنازع زرعی قوانین کو ختم نہیں کردیتی‘۔

دوسری جانب بھارت کے مختلف علاقوں جیسے غازی پور، سنگھو، ٹکری سرحد پر ہزاروں کسانوں کا احتجاج جاری ہے۔

farmers burnt effigie of prime minister observing black day

غازی پور سرحد پر کسانوں کے احتجاج کی قیادت کسان رہنما راکیش ٹکیت نے کی، جنہوں نےیومِ سیاہ کی مناسبت سے خاص طور پر کالی پگڑی باندھی۔

احتجاجی مظاہرین نے وزیر اعظم مودی کا کا پتلا بھی نذر آتش کیا، جس پر پولیس نے انہیں روکنے کی کوشش کی تو مظاہرین اور اہلکاروں کے درمیان نوک جھونک بھی ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں