The news is by your side.

Advertisement

مودی سرکار کی پاکستان مخالف ہرزہ سرائی، بھارتی سیاستدان بھی پھٹ پڑے

نئی دہلی: مودی سرکار کی مسلمان اور پاکستان مخالف ہرزہ سرائی پر بھارتی سیاستدان بھی پھٹ پڑے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی پنجاب اسمبلی کے رکن مہندر پال سنگھ کا کہنا ہے کہ مودی کے پاس دکھانے کو کچھ اچھا نہیں اس لیے پاکستان کو بدنام کرکے خود کو اچھا ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔

سرکاری دباؤ پر بھارتی چینل نے پنجاب اسمبلی کے رکن مہندر پال سنگھ کا انٹرویو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر سے ہٹا دیا۔

دوسری جانب کانگریس کی رہنما پریانکا گاندھی اترپردیش میں پولیس تشدد کا شکار مسلمانوں سے ملنے پہنچیں، پریانکا گاندھی نے کہا کہ پولیس نے مدرسے میں گھس کر طلبا کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔

مزید پڑھیں: متنازع قانون، ریکارڈ سردی میں مسلمان خواتین کا شیر خوار بچوں کے ساتھ دھرنا

پریانکا گاندھی کا کہنا تھا کہ بچوں سمیت متعدد نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا ہے جس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ بھارت میں متنازع شہریت قانون کے خلاف احتجاج جاری ہے اب تک پولیس سے جھڑپوں میں 30 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

یاد رہے کہ چند روز قبل بھارتی ضلع بجنور کے علاقے نہٹور میں مودی سرکار کے شہریت قانون کے خلاف مظاہرے کے دوران گولیاں لگنے سے 2 مسلم نوجوان محمد سلیمان اور محمد انس جاں بحق ہوگئے تھے۔

مقتول سلیمان کے والد زاہد کا کہنا تھا کہ جب ہم اس مٹی میں پیدا ہوئے اور اسی مٹی میں دفن نہیں ہوں گے تو کہاں جائیں گے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں