The news is by your side.

Advertisement

ملک سے سودی نظام کا خاتمہ، 13 فروری سے روز سماعت ہوگی، عدالت

اسلام آباد: وفاقی شرعی عدالت میں ملک سے سودی نظام کے خاتمے سے متعلق  مقدمات کی سماعت ہوئی، جج نے آئندہ سماعت سے ان مقدمات کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کرنے کے احکامات جاری کیے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی شرعی عدالت میں ملک سے سودی نظام کے خاتمے سے متعلق مقدمات کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت جسٹس ریاض احمد کی سربراہی میں  جسٹس ڈاکٹرفدامحمد خان،جسٹس نجم الحسن اور جسٹس ظہور احمدشیروانی پر مشتمل عدالت کے چار رکنی لارجر بینچ نے مقدمات کی سماعت کی۔

وفاقی شرعی عدالت نے سودی نظام خاتمے کے مقدمات کی سماعت 13 فروری تک ملتوی کرتے ہوئے احکامات جاری کیے کہ آئندہ سے ان مقدمات کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کی جائے گی اور کسی صورت کیس ملتوی نہیں کیا جائے گا۔

اٹارنی جنرل نے بھی سماعت مکمل کرنے کیلئے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کراوائی جبکہ کیس کی سماعت  کے  دوران فریقین نے  باہمی مشاورت سے  عدالت کو آگاہ کیا کہ آئندہ سماعت سے جماعت اسلامی کے وکیل دلائل کاآغاز کرینگے۔

دوران سماعت اٹارنی جنرل اشتر اوصاف، جماعت اسلامی کے وکلا قیصر امام، سیف اللہ گوندل،توصیف عباسی، شیر حامد خان اور دیگر فریقین عدالت میں پیش ہوئے۔جماعت اسلامی کے وکیل قیصر امام نے عدالت کو بتایا کہ جماعت اسلامی کے وکلاء ایک ٹیم کی اس مقدمہ  کے تمام پہلوؤں پر عدالت کی معاونت کرے گی۔

ان کا کہنا تھاکہ سپریم کورٹ کی طرف سے اس مقدمہ کو شرعی عدالت میں ریمانڈ کرنے اور اس ضمن میں اٹھائے گئے تمام سوالات کے جوابات کے حوالے سے بھی معاونت کی جائے گی۔

اٹارنی جنرل نے موقف اختیار کیا کہ وفاقی حکومت خود چاہتی ہے کہ از کیس کا فیصلہ جلد ہو کیونکہ یہ مقدمہ ملک کے عوام کے معاشی مسائل سے متعلق ہے۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت 13فروری تک ملتوی کردی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں