The news is by your side.

Advertisement

گاڑی میں پتھر لانے والے لیگی رہنما کی عبوری ضمانت منظور

لاہور: انسداد دہشت گردی کی عدالت نے گاڑی میں پتھر لانے والے لیگی ایم پی اے مرزا جاوید کی 11 ستمبر تک عبوری ضمانت منظور کر لی۔

تفصیلات کے مطابق 11 اگست کو نیب آفس میں مریم نواز کی پیشی کے موقع  پر ہنگامہ آراٸی کے معاملے میں انسداد دہشت گردی عدالت نے گاڑی میں پتھر لانے والے لیگی رہنما کی 6 دن کے لیے عبوری ضمانت منظور کر لی۔

انسداد دہشت گردی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے درخواست پر سماعت کی، تفتیشی افسر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم مرزا جاوید نے مریم نواز کی پیشی پر اپنی گاڑی پر پتھر لادے، جس سے پولیس پر پتھراؤ کیا گیا۔

ملزم کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ چوہنگ پولیس نے نیب آفس پر حملے اور ہنگامہ آرائی کے الزام میں بے بنیاد مقدمہ درج کیا ہے، میرے علم میں نہیں کہ گاڑی میں پتھر کس نے رکھے، عدالت درخواست ضمانت منظور کرے۔

نیب آفس کے باہر ہنگامی آرائی: مریم نواز سمیت دیگر کیخلاف مقدمے میں دہشت گردی دفعات شامل

درخواست کی سماعت کے بعد عدالت نے ایک لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض مرزا جاوید کی 11 ستمبر تک عبوری ضمانت منظور کر لی۔

یاد رہے گیارہ اگست کو مریم نواز کی نیب میں پیشی کے موقع پر صورت حال کشیدہ ہو گئی تھی، نیب دفتر کے باہر لیگی کارکنان کی جانب سے پولیس پر پتھراؤ کیا گیا جب کہ لیگی کارکنوں نے نیب دفتر کے باہر رکاوٹیں بھی ہٹا دی تھیں۔ پولیس کی جانب سے لیگی کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے شیلنگ کرنی پڑی، واٹر کینن بھی طلب کی گئی۔

رپورٹس کے مطابق لیگی کارکنان گاڑی ایل ای 3378 میں پتھر سے بھرے شاپر لے کر آئے تھے، لیگی کارکنوں نے گاڑی کے اندر سے پتھر نکال کر پولیس پر برسائے، پتھراؤ سے نیب دفتر کے کھڑیوں کے شیشے بھی ٹوٹے۔

لیگی کارکنوں کے پتھراؤ سے 15 سے زائد اہل کار زخمی ہوئے تھے جب کہ اینٹی رائٹ فورس کے جوانوں کو بھی پتھر لگنے سے شدید چوٹیں آئی تھیں، متعدد پولیس اہل کاروں کو موقع ہی پر طبی امداد دی گئی تھی۔

ہنگامہ آرائی کے نتیجے میں نیب نے پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کی پیشی منسوخ کر دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں