23 مارچ ہماری قومی تاریخ کا اہم سنگ میل ہے: احسن اقبال: Ahsan Iqbal
The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ کے فیصلے سے 16 ارب ڈالر کا نقصان ہوا: احسن اقبال

اسلام آباد:  وزیر  داخلہ احسن  اقبال  نے  کہا  ہے  کہ  سپریم کورٹ کے  فیصلے سے  16  ارب  ڈالر  کا نقصان ہوا اور سرمایہ کاری رک گئی، 2017 کے اوائل  میں حکومتی  رفتار  برقرار رہتی تو اہداف پورے کر لیتے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، احسن اقبال کا کہنا تھا کہ عمران خان اپنی تقریروں میں  سب  پر کیچڑ اچھال کر  چلے  جاتے ہیں، چین اور کوریا میں کوئی  عمران  خان  ہوتا  تو  یہ ممالک بھی ترقی  نہ کرپاتے، انہیں صرف تنقید کرنا آتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں پاکستان کو آئندہ سات سال میں دنیا کی 25 ویں معیشت میں شامل کرنا ہے، خطے سے دہشت گردی کا خاتمہ کردیا، امن کی جانب تیزی سے ترقی کررہے ہیں، ہماری حکومت نے 2013 میں جذبہ تعمیر سے حکومت کا اغاز کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے کھیل کے میدان اجڑ گئے تھے آج رونقیں دوبارہ آباد ہو رہی ہیں، ہر شہری پاکستان کو ٹاپ 20 ممالک میں لانے کی کوشش کرے، سی پیک جیسا بڑا اور اہم منصوبہ دونوں ممالک کی مشترکہ کاوش ہے، منصوبہ پاک چائنہ دوستی کو ہمالیہ سے بلند ستاروں تک لےگیا ہے۔

سی پیک سے متعلق بھارت سازشیں کررہا ہے‘ احسن اقبال

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ موجودہ دور میں ٹیکنالوجی کو کلیدی حیثیت حاصل ہے، حکومت نے تعلیم، ٹیکنالوجی کے بجٹ میں قابل قدر اضافہ کیا، اسپیس ٹیکنا لوجی میں تعلیم وتحقیق کو منشور میں بھی شامل کیا، الیکشن میں کامیاب ہوئے تو اسپیس ٹیکنا لوجی میں خاطرخواہ کام کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا خلائی پروگرام چین کی مدد سے ترقی یافتہ پروگرامز میں شامل ہوچکا ہے، سیٹلائٹ 2018 کے وسط میں خلا میں بھیجا جائے گا، مواصلاتی سیٹلائٹ سے آئی ٹی، زراعت، صنعتی شعبوں میں فوائد کا حصول ہوگا، ہمارا مشن پاکستان کو ٹیکنالوجی اور جدت سے لیس کرنا ہے۔

دہشت گردی اور ماحولیاتی چیلنجز سے مشترکہ طور پر نمٹا جا سکتا ہے: احسن اقبال

ان کا مزید کہنا تھا کہ انسانی ترقی میں خلائی ترقی کا بہت اہم کردار ہے، مواصلاتی سیٹلائٹ کی ترقی کا سہرا بھی موجودہ حکومت کے سر جاتا ہے، امید ہے پاکستان 2020 میں  اپنے خلاباز بھیجنے کی صلاحیت حاصل کرلے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں