The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: مخصوص خواتین کو 5 سال کے لیے مفت اقامہ دینے کا فیصلہ

ریاض: سعودی عرب نے مملکت میں مقیم غیر ملکی مطلقہ اور بیوہ خواتین کے لیے 5 سالہ مفت اقامہ حاصل کرنے کا طریقہ کار متعارف کروا دیا۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی محکمہ پاسپورٹ نے طلاق یافتہ یا بیوہ خواتین کے لیے 5 سالہ مفت اقامہ حاصل کرنے کا طریقہ کار متعارف کروا دیا ہے۔

بیوہ یا مطلقہ کو 5 سالہ اقامے کے حصول کے لیے مخصوص دستاویزات اور کاغذات پیش کرنا ہوں گے، محکمہ پاسپورٹ کا کہنا ہے کہ 5 سالہ مفت اقامہ صرف ان مطلقہ یا بیوہ خواتین کو دیا جائے گا جو سعودی اولاد کی مائیں ہوں۔

محکمہ پاسپورٹ نے سعودی اولاد کی غیر ملکی ماں کو مفت اقامہ دینے کے لیے لائحہ عمل بھی جاری کیا ہے، جس کے مطابق بیوہ یا مطلقہ کو مندرجہ ذیل دستاویزات پیش کرنا ہوں گی۔

درخواست گزار کو پہلے مستقل اقامے والا فارم بھرنا ہوگا، پاسپورٹ کی فوٹو کاپی اور اقامہ کارڈ کی فوٹو کاپی پیش کرنا ہوگی اس کے علاوہ طلاق نامے کی فوٹو کاپی کے ساتھ نکاح نامے کی فوٹو کاپی بھی دینا ہوگی۔

اس کی شرط یہ ہے کہ نکاح نامے پر وزارت داخلہ کی جانب سے شادی کی منظوری بھی تحریر ہو۔ سعودی محکمہ پاسپورٹ کے مطابق  سعودی اولاد کے برتھ سرٹیفکیٹ کی کاپی  اور فیملی کارڈ کی فوٹو کاپی پیش کرنا ہوگی۔

ایک حلفیہ دستاویز  یہ بھی پیش کرنا ہوگی کہ وہ مطلقہ یا بیوہ اپنے شوہر کی وفات یا طلاق ملنے کے بعد اب تک کسی اور کے نکاح میں نہیں ہے، شوہر کے انتقال کی صورت میں ڈیتھ سرٹیفکیٹ بھی پیش کرنا ہوگا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں