The news is by your side.

Advertisement

مشہور و معروف آئرش گلوکارہ شنیڈ اوکانر نے اسلام قبول کرلیا

آئر لینڈ : مشہور و معروف آئرش راک اسٹار شنیڈ اوکانر نے اسلام قبول کرکے اپنا نام شہدا رکھ لیا اور کہا میرا اسلام قبول کرنا بغیر کسی دباو کہ ایک فطری عمل ہے۔

تفصیلات کے مطابق 51 سالہ مشہور و معروف آئرش راک اسٹار شنیڈ اوکانر نے اسلام قبول کرنے کے بعد سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا مسلمان ہونے پر بے حد فخر محسوس کررہی ہیں، یہ کسی بھی ذہین نظریاتی سفر کا فطری نتیجہ ہے اور تمام تحریری مطالعے اسلام کی طرف جاتے ہیں، میں نے اپنا نام بھی تبدیل کر لیا ہے، اب مجھے نئے نام شہداء سے ہی پکارا جائے۔

اسلام قبول کرنے کے ساتھ ہی گلوکارہ کی جانب سے ٹوئٹر پیج پر نام اور تصویر بھی تبدیل کردی گئی۔

شنیڈ اوکانر نے حجاب کے ساتھ تصویر اور ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر شئیر کی۔

ایک اور ٹوئٹ میں آئرش گلوکارہ نے اذان کی ادائیگی کی ویڈیو شیئر کی اور ادائیگی میں ہونے والی غلطیوں پر معافی مانگی۔

مغربی میڈیا کے مطابق آئرش گلوکارہ شنیڈ اوکانر جنہیں مگدا داویت کے نام سے بھی جانا جاتا ہے ،ان کو 80 کی دہائی میں اس وقت شہرت ملی، جب انہوں نے اپنی پہلی میوزک البم لانچ کی اور میوزل البم “دی لائن اینڈ دی کوبرا” نے ریلیز کے ساتھ ہی کئی ریکارڈز قائم کیے۔

بعد ازاں 90 کی دہائی میں معروف گلوکار کو گلوکار پرنس کے گانے “ناتھنگ کپمیریس ٹو یو” کے ری مکس نے شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں