The news is by your side.

Advertisement

"حلف نہ اٹھایا تو نشست سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے”

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے اسحاق ڈار کی نااہلی کیلئے دائر درخواست عدم پیروی پر خارج کردی ہے، جس کے نتیجے میں اسحاق ڈار کی بطور سینیٹر ممبرشپ کا نوٹیفکیشن روکنے کا حکم امتناع ختم ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں اسحاق ڈار کی نااہلی سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس آف پاکستان کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔

سماعت کے موقع پر مدعی پیش نہ ہوئے، جس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ درخواست گزار نوازش پیرزادہ گزشتہ سماعت پر بھی پیش نہیں ہوئے تھے، اسحاق ڈار کو عدالت نے طلب کیا تھا لیکن وہ بھی پیش نہیں ہوئے۔اس موقع پر کمرہ عدالت میں موجود سابق وزیر خزانہ کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اسحاق ڈار بیمار ہیں اور بیرون ملک مقیم ہیں، جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل عامر رحمان نے کہا کہ آرڈیننس کے تحت دو ماہ حلف نہ اٹھانے والے کی نشست خالی تصور ہوگی، اسحاق ڈار کا نوٹیفکیشن نہیں ہوا اس لئے ان پر قانون کا اطلاق نہیں ہوتا۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے درخواست عدم پیروی پر خارج کردی اور ساتھ ہی نوٹیفکیشن روکنےکا حکم امتناع بھی ختم ہوگیا،حکم امتناع ختم ہونے پر اسحاق ڈار کی کامیابی کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا۔

نوٹیفکیشن جاری ہوتے ہی اسحاق ڈار پر نئے آرڈیننس کا اطلاق ہوجائے گا، اگر اسحاق ڈار نے دو ماہ کے اندر پاکستان آ کر حلف نہ اٹھایا تو وہ سینیٹ کی نشست سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں