The news is by your side.

Advertisement

جاپان نے روس کو 300 آئٹمز کی برآمد پر پابندی عائد کر دی

ٹوکیو: جاپان نے روس کو 300 آئٹمز کی برآمد پر پابندی عائد کر دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق جاپان نے روس کو اپنی مصنوعات کی برآمد پر پابندی عائد کر دی، جاپان کی وزارت اقتصادیات، تجارت اور صنعت نے اعلان کیا ہے کہ یوکرین میں فوجی آپریشن کی وجہ سے روس کے خلاف لگائی گئی پابندیوں میں توسیع کی گئی ہے۔

جاپانی وزارت کے مطابق اُس سامان اور ٹیکنالوجیز کی فہرست میں توسیع کر دی گئی ہے جن کی روس کو برآمد کرنے پر پابندی ہے، اس فہرست میں پہلے اعلان کردہ 57 آئٹمز کی بجائے اب تقریباً 300 آئٹمز شامل ہیں، روس کو برآمدات پر پابندی 18 مارچ سے نافذ العمل ہوگی۔

جن اشیا کی برآمد پر پابندی ہے ان میں سیمی کنڈکٹرز، سمندری اور ہوا بازی کی حفاظت کو یقینی بنانے کے آلات، ٹیلی کمیونیکیشن کا سامان، مواصلاتی آلات، جوہری توانائی سے متعلق آلات اور مصنوعات، کیمیائی صنعت کی مصنوعات، تیل نکالنے کے آلات، مختلف قسم کے سینسرز، اور سافٹ ویئرز شامل ہیں۔

روسی حملے سے جاپانی کمپنیاں بڑی مشکل میں پڑ گئیں

یاد رہے کہ اس سے قبل، جاپان نے روس کی 49 کمپنیوں کے خلاف برآمدی پابندیاں عائد کی تھیں، جاپان نے متعدد روسی بینکوں کے اثاثے بھی منجمد کر دیے ہیں۔

مزید برآں جاپان نے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن، سلامتی کونسل کے نائب چیئرمین دمتری میدویدیف، وزیر خارجہ سرگئی لاوروف، سلامتی کونسل کے سیکریٹری نکولے پیٹروشیف، وزیر دفاع سرگئی شوئیگو اور جنرل اسٹاف کے سربراہ والیری گیراسیموف کے خلاف ذاتی پابندیاں بھی عائد کی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں