The news is by your side.

Advertisement

ریاست مخالف بیانات، عبوری ضمانت مسترد، جاوید لطیف گرفتار

لاہور: ریاست مخالف بیانات پر عدالت سے عبوری ضمانت مسترد ہونے پر جاوید لطیف کو گرفتار کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کی سیشن عدالت نے ن لیگی ایم این اے جاوید لطیف کی عبوری ضمانت کی درخواست مسترد کر دی، جس پر سی آئی اے نے ان کو سگیاں پل سےگرفتار کر لیا۔

جاوید لطیف عدالتی فیصلہ سننے سے پہلے ہی عدالت سے چلے گئے تھے، جس پر پولیس اہل کاروں اور سی آئی اے نے ان کے پیچھے دوڑیں لگا دیں، ان کی ضمانت کی درخواست ایڈیشنل سیشن جج واجد منہاس نے مسترد کی۔ وکیل جاوید لطیف نے تصدیق کر دی ہے کہ جاوید لطیف کوگرفتار کر لیا گیا ہے، ان کی گرفتاری سگیاں پل سے عمل میں آئی۔

واضح رہے کہ جاوید لطیف نے ریاست مخالف بیان کیس میں سیشن کورٹ میں ضمانت کی درخواست دائر کر رکھی تھی، آج سماعت کے دوران پراسیکیوٹر نے ان کی ضمانت خارج کرنے کی استدعا کی۔

سرکاری وکیل نے کہا جاوید لطیف کا متنازع بیان اپنے لیڈر کی محبت میں حدود سے تجاوز ہے، ان کے بیان کی سی ڈی کو فرانزک کے لیے بھجوا دیا گیا ہے، پراسیکیوشن کا کیس قانون کے تمام تقاضوں کے مطابق ہے، اس اسٹیج پر جاوید لطیف کی ضمانت نہیں بنتی، کیس میں جو سیکشنز لگائےگئے ہیں وہ قابل ضمانت نہیں ہیں۔

جاوید لطیف کے وکیل فرہاد علی شاہ نے کہا مریم نواز کو قتل کرنے کے لیے ایک سازش تیار کی گئی، جس کے تناظر میں جاوید لطیف نے یہ بات کی، یہ تفتیش کا کیس ہے اینکر کے ساتھ جاوید لطیف کا آمنا سامنا کرانا ہے، سی آئی اے لاہور کیس کو دیکھ رہی ہے، یہاں کسی دہشت گرد کی ضمانت نہیں لگی، پولیس کے پاس ان معاملات پر ایف آئی آر درج کرانے کا اختیار ہی نہیں۔

سرکاری وکیل نے کہا ریاست ماں جیسی ہوتی ہے کیا اپنی ماں سے متعلق ایسی زبان استعمال کی جا سکتی ہے، کیا کسی جگہ ہماری بد نیتی نظر آ رہی ہے، جب کوئی یہ کہے کہ سقوط ڈھاکا جیسا حادثہ ہو جائے گا، تو کیا پاکستانی شہری خاموش رہ سکتا ہے، جاوید لطیف کے وکیل نے بھی ان کے بیانات کی تردید نہیں کی، وہ ایم این اے ہیں کیا ان کو ایسا رویہ اختیار کرنا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں