The news is by your side.

Advertisement

کرونا کی وجہ سے رہائی پانے والا قیدی کزن کی فائرنگ سے ہلاک

عمان: کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے متعدد ممالک میں قیدیوں کو عارضی طور پر رہا کیا گیا ہے، اردن میں ایک قیدی کو رہائی ملی تو اس کے دوستوں نے ہوائی فائرنگ کی جس کے نتیجے میں رہائی پانے والا قیدی ہلاک ہوگیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کی وجہ سے رہائی پانے والا قیدی پر اس کے کزن کی جانب سے خوشی میں ہوائی فائرنگ کی گئی لیکن اس دوران گولی رہائی پانے والے قیدی کو جالگی جس سے گھر میں خوشی کا سماں ماتم میں بدل گیا۔

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق 46 سالہ ساری سلیم نامی شخص جب رہا ہو کر گھر پہنچا تو اسے خوش آمدید کہنے کے لیے اس کے گھر کے پاس رشتے دار اور پڑوسی موجود تھے جبکہ اس خوشی کے موقع پر اس کے کزن کی جانب سے ہوائی فائرنگ کی گئی جو غلطی سے رہا ہونے والے شخص کے سر پر لگی اور وہ موقع پر ہی دم توڑ گیا۔

پولیس اور مقتول کے گھر والوں کے مطابق ہوائی فائرنگ کرنے والا احمد سلامہ نامی شخص ہلاک ہونے والے قیدی کا دور کا کزن تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والا قیدی منشیات فروش اور بغیر لائسنس اسلحہ رکھنے کے جرم میں پچھلے 8 مہینوں سے جیل میں تھا جسے سزا مکمل ہونے سے دو ہفتے قبل ہی کرونا کی وجہ سے رہا کیا گیا تھا۔

رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ ہوائی فائرنگ کرنے والا اردن کی مسلح افواج کا ممبر ہے جبکہ اس سے قبل بھی اس نے ایک شادی کے موقع پر ہوائی فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں 6 لوگ زخمی ہوگئے تھے۔

کزن کی جان لینے والے شخص کا موقف تھا کہ اس نے فائرنگ کرکے ساری گولیاں ختم کردی تھیں لیکن میگزین میں پھنسی ہوئی آخری گولی کا اسے علم نہیں تھا اور اس سے ہی وہ ہلاک ہوگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں